شعر و ادب

گرم دم گفتگو

علامہ اقبال کا خیال تھا کہ کامیابیوں کے زینے طے کرنے کے لئے انسان کو ''نرم دَم گفتگو '' اور'' گرم دم جستجو'' ہونا چاہئے۔ یعنی عام بول چال کی زبان میں اسے اس بات کا قائل ہونا چاہئے کہ'' باتیں کم اور کام زیادہ'' لیکن کچھ لوگ اس خیال کو فرسودہ تصور کرتے ہیں اور اس سے اتفاق نہیں کرتے ۔ اس کے برعکس وہ اس بات کے قائل ہیں کہ انسان ''دمِ جستجو'' جو چاہے کرے لیکن ''دمِ گفتگو'' اس کا ''گرم'' رہنا ضروری ہے۔ مزے کی بات یہ ہے کہ اس نظریے پرعمل کرنے والے بعض افراد اپنے مقصد میں خاصے کامیاب ثابت ہوتے ہیں۔
(معین اعجاز کی '' ادب گزیدہ''  سے)
 

یہ تحریر 604مرتبہ پڑھی گئی۔

TOP