اداریہ

ہمیں پیار ہے پاکستان سے- اداریہ

دفاع کسی بھی قوم کی اوّلین ترجیح ہوا کرتی ہے۔ جو قومیں اپنے دفاع کو مؤثر بنانے میں غفلت کا مظاہرہ کرتی ہیں اُن کی سالمیت کو ہمیشہ خدشات لاحق رہتے ہیں ۔ الحمدُﷲ وطنِ عزیز، پاکستان، دُنیا کے اُن ممالک میں سے ہے جو اپنے دفاع کو یقینی بنانے کے لئے ہر ممکن اقدامات کرتے ہیں۔ یہی وجہ ہے کہ جب 1965 میں عددی اعتبار سے ایک بڑے دشمن نے جارحیت کی تو اس نوزائیدہ مملکت کی چھوٹی مگر پُرعزم  اور پیشہ ور سپاہ اور غیور عوام نے دشمن کو اُس کی جارحیت کا نہ صرف منہ توڑ جواب دیا بلکہ کھیم کرن اور مونا بائو سمیت دشمن کے متعدد علاقوں تک جا پہنچے اور دشمن کو راہ ِ فرار اختیار کرنا پڑی۔ یوں دشمن نے خطے کے ایک بڑے ملک روس کی مدد سے مذاکرات کے ذریعے اس جنگ سے جان چھڑائی۔ یقینا ستمبر65 کی جنگ میں پاک افواج کا برتری حاصل کرنا اس قوم کے لئے کسی بہت بڑی فتح سے کم نہ تھا۔ یہی وجہ ہے کہ  قوم ہر سال6 ستمبر کو یومِ دفاع کے طور پر مناتی ہے۔

 

 یومِ دفاع صرف ایک دن نہیں بلکہ ایک استعارہ ہے اولوالعزمی کا، بہادری کا اور شجاعت کا۔ پاکستان کے غیورعوام کے لئے یومِ دفاع اب صرف 6 ستمبر65 کی فتح منانے کا دِن نہیں رہا بلکہ ایک ایسا عزم اور نصب العین ہے جس کے تحت انہوںنے ریاست پاکستان کو نہ صرف بیرونی دشمن سے محفوظ رکھنا ہے بلکہ اندرونی سطح پر بھی اپنی افواج کے ساتھ مل کر ملک کو درپیش چیلنجوں سے نبرد آزما ہونا ہے۔ آپریشن رد الفساد اُس کی ایک روشن مثال ہے کہ کس طرح یہ قوم دہشت گردی کے عفریت پر قابو پانے کے بعد ملک بھر میں چھپے ہوئے بچے کھچے دہشت گردوں کا سراغ لگا کر اُن کا قلع قمع کرنے میں مصروف ہے۔ افواجِ پاکستان صرف دفاع ہی نہیںملکی وقار اور ترقی سے متعلق ہر منصوبے میں آگے بڑھ کر قوم کا ہاتھ بٹاتی ہے۔ جس کی حالیہ مثال افواجِ پاکستان کے جوانوں اور افسروں کی جانب سے اپنی دو دن کی تنخواہ ڈیم فنڈ میں جمع کرانا ہے تاکہ ملک سے پانی اور توانائی کا بحران ختم ہو سکے۔ اس کے علاوہ سیلاب ہوں، زلزلے ہوں یا دیگر قدرتی آفات، ہماری افواج قوم کی معاونت کے لئے ہمیشہ ہراول دستے کا کردار ادا کرتی ہیں۔ حال ہی میں چیف آف آرمی سٹاف نے شجرکاری مہم کے ذریعے پاک آرمی کی جانب سے 20 لاکھ پودے لگا کر اس کارِ خیر میںپاک فوج کا حصہ ڈالنے کے عزم کا اظہار کیا ہے۔ مختلف گیریژنز اور شہروں میں افو اج کی جانب سے درخت لگانے کا کام شروع بھی ہو چکا ہے اور افواجِ پاکستان نے اس مہم میں دس ملین درخت لگانے کا عزم کیا ہے۔ یوں افواجِ پاکستان ریاست کو نہ صرف دفاعی اعتبار سے مستحکم کرنے، بلکہ اسے سرسبز و شاداب بنانے، میں بھی اپنا کلیدی کردار ادا کرنے کا عزم کئے ہوئے ہیں۔ افواجِ پاکستان بجا طور پر ' ہمیں پیار ہے پاکستان سے' کے سلوگن پر عمل پیرا دکھائی دیتی ہیں کہ پاکستان ہمارا ہے اور ہم پاکستان سے ہیں۔پاکستان ہمیشہ سلامت رہے۔

(آمین)

یہ تحریر 735مرتبہ پڑھی گئی۔

TOP