ہلال نیوز

حکومت پا کستان آزاد کشمیر حکومت کے ساتھ مل کر لائن آف کنٹرول کے  متا ثرین کو ہر ممکن مدد فراہم کرے گی۔ چیئرمین سینیٹ سٹینڈنگ کمیٹی سینیٹ سٹینڈنگ کمیٹی برائے امور کشمیر و گلگت  بلتستان کا لائن آف کنٹرول کا دورہ

گزشتہ دنوں سینیٹ سٹینڈنگ کمیٹی برائے امور کشمیر و گلگت  بلتستان نے لائن آف کنٹرول کے علاقے نیلم سیکٹر (کیرن )کا دور ہ کیا۔کمیٹی نے انتظامیہ کے ہمراہ متاثرین لائن آف کنٹرول کی دلجوئی کی اور مسائل سنے۔ کمیٹی میں سینیٹرپروفیسر علامہ ساجد میر،سینیٹر فاروق ایچ نائیک، سینیٹر فلک ناز، سینیٹر محمد قاسم رانجھو شامل تھے۔سینیٹ سٹینڈنگ کمیٹی برائے امور کشمیر و گلگت  بلتستان کوڈپٹی کمشنر محمد شوکت خان یوسفزئی اور تحریک انصاف کے مرکزی رکن راجہ محمد الیاس خان نے ضلع نیلم کی مجموعی صورتحال سمیت آبی وسائل و  ہائیڈل پاور پراجیکٹ،سیاحتی مقامات، جنگلات و جنگلی حیات، قدرتی آفات کے علاوہ لائن آف کنٹرول کے علاقوں میں بھارتی فائرنگ کے نتیجے میں وادی نیلم کے مسائل پر تفصیلی بریفنگ دی۔ اس موقع پرچیئرمین سینیٹ سٹینڈنگ کمیٹی سینیٹر پروفیسر علامہ ساجد میرنے لائن آف کنٹرول کے علاقے کیرن میں متاثرین سے خطاب کرتے ہوئے نیلم کے شہریوں کو پاک فوج کے شانہ بشانہ جواں مردی اور استقامت کے ساتھ بھارت کا مقابلہ کرنے پرخراجِ تحسین اور شہدائے کشمیر کو خراجِ عقیدت پیش کیا۔ انہوں نے کہا کہ حکومت پا کستان آزاد کشمیر حکومت کے ساتھ مل کر لائن آف کنٹرول کے متا ثرین کو ہر ممکن مدد فراہم کرے گی۔ اس موقع پر سینیٹر فاروق ایچ نائیک نے کہا کہ نیلم کی ترقی کا دارو مدارسیاحت پر ہے، آزاد کشمیر میں موجود سیاحت کے پوٹینشل کو قومی سطح پر اجاگر کرنے کے لئے مؤثر انداز میں تشہیری مہم چلانے کی ضرورت ہے۔ آزاد کشمیر میں ہیلی کاپٹر سروس چلانے سے سیاحت کو فروغ ملے گا۔ پبلک پرائیویٹ پارٹنر شپ کے تحت سیاحتی صنعت کو وسعت دی جا سکتی ہے۔پاکستان کی تمام سیاسی پارٹیاں مسئلہ کشمیر کے حل کے لئے ایک پیج پر ہیں۔وادی نیلم کے شہریوں نے وطن عزیز کے دفاع اور تحریکِ آزادٔ کشمیرکے لئے بے پناہ قربانیاں دی ہیں اور ہم اقوام متحدہ کی قراردادوں کے مطابق مسئلہ کشمیر کا حل چاہتے ہیں۔ سابق ممبر قانون ساز اسمبلی راجہ الیاس خان نے متاثرین لائن آف کنٹرول کے مسائل پر بات کرتے ہوئے کہا کہ وادٔ نیلم کا علاقہ تین دہائیوں تک بھارتی اشتعال انگیزیوں اور گولہ باری کی زد میں رہا جس کی وجہ سے ترقی ممکن نہ ہو سکی۔ نیلم کے شہریوں نے پاک فوج کے شانہ بشانہ وطن عزیز کے دفاع اور تحریک آزادی کشمیر کے لئے لا زوال قربانیاں دی ہیں۔ انھوں نے کہا کہ ایندھن کے متبادل ذرائع فراہم کر کے جنگلات کے تحفظ کو یقینی بنایا جا سکتا ہے۔ موسم سرما کے دوران بالائی وادیِ نیلم میں صحت کی سہولیات کے فقدان کا تدارک بھی کریں گے۔



 

یہ تحریر 267مرتبہ پڑھی گئی۔

TOP