شعر و ادب

قائداعظم

تیرے خیال سے ہے دل شادماں ہمارا
تازہ ہے جاں ہماری دل ہے جواں ہمارا
تیری ہی ہمتوںسے آزاد ہم ہوئے ہیں
خوشیاں ملی ہیں ہم کو دل شاد ہم ہوئے ہیں
تجھ سے ہی لہلہایا یہ گلستاں ہمارا
ہم سو رہے تھے تُو نے آکر ہمیں جگایا
پھرتے تھے ہم بھٹکتے، رستہ ہمیں بتایا
تو ُرہنما ہمارا، تُو پاسباں ہمارا
تیرے ہی حوصلے سے طاقت ملی ہے ہم کو
تیری ہی آبرو سے عزت ملی ہے ہم کو
چمکا ہے تیرے دم سے قومی نشاں ہمارا
اس دیس میں رہے گا چرچا مدام تیرا
جس شخص کو بھی دیکھا، لیتا ہے نام تیرا
دل تیری یاد سے ہے اب تک جواں ہمارا
ہم جو قدم اُٹھائیں، آتی ہے یاد تیری
ہم جس طرف بھی جائیں، آتی ہے یاد تیری
تجھ سے رواں دواں ہے یہ کارواں ہمارا
کلیاتِ صوفی تبسّم
 

یہ تحریر 486مرتبہ پڑھی گئی۔

TOP