اداریہ

ہم سب کا پاکستان

قومیں اپنے نظریے کی بدولت پہچانی جاتی ہیں۔ کوئی بھی قوم اپنا وقار اور تمکنت اُس وقت تک ہی برقرار رکھ سکتی ہے جب تک وہ اپنے نظریے اور مقصدیت کے ساتھ جُڑی رہے۔ نظریہ وہ بنیادی اساس ہے جو کسی بھی قوم کی بنیادوں کو مضبوط بناتا ہے اور اس انداز سے استواررکھتا ہے کہ اُس قوم کی مستقبل کی منزلیں آسان ہو جاتی ہیں۔ بڑی قومیں اپنی تاریخ کو یاد رکھتی ہیں کہ قوموں کی تاریخ اُن کے مستقبل کی راز داں ہوتی ہے۔ ٹھیک76 برس قبل لاہور کے منٹو پارک میں جسے اب اقبال پارک کہا جاتا ہے جہاں ہمارے بزرگوں اور رہنماؤں نے اس بے کس اور پسی ہوئی قوم کو ایک خواب دیا اور 23 مارچ1940 کو ایک ایسی قرار داد پیش کی جو پاکستان کے قیام کی بنیاد ٹھہری اور برصغیرکے مسلمان صرف سات برس کے عرصے میں اپنے قائد محمدعلی جناح کی عظیم قیادت میں اپنی منزل پانے میں کامیاب ہوگئے۔


پاکستان تو معرضِ وجود میں آگیا لیکن یہ ہمیشہ علاقائی اور بین الاقوامی سطح کے دشمنوں کی سازشوں کی زد میں رہاہے۔ اسے بار ہا دشمن کی جارحیت کا سامنا کرنا پڑا جس کا پاکستان اور اس کی مسلح افواج کی جانب سے دندان شکن جواب دیا جاتا رہا۔ آج بھی پاکستان کو دہشت گردی کے عفریت کا سامنا ہے لیکن افواجِ پاکستان نے جس طرح سے اس عفریت کا مقابلہ کیا ہے اس کا اعتراف بین الاقوامی سطح پر کیا جاتا ہے۔ دہشت گردی کے خلاف جاری آپریشن ضربِ عضب اب آخری مرحلے میں داخل ہو چکا ہے۔ جو پاکستان کے عوام اور اُس کی افواج کے لئے ایک بہت بڑی کامیابی ہے۔ ظاہر ہے دہشت گرد اب بھی اپنے ملکی اور غیرملکی معاونین کی سرپرستی میں اِکا دُکا دہشت گردی کی وارداتیں کرنے کی سعی کرتے ہیں جس پر اُن کے خلاف موّثر کارروائی کی جاتی ہے۔


پاکستان کی دہشت گردی اور دیگر چیلنجز کے خلاف کامیابیاں اس امر کی نشاندہی کرتی ہیں کہ یہ قوم آج بھی اپنے نظریے اورمقصدیت کی آبیاری اپنے خون سے کررہی ہے۔ اور اس عظیم مقصد میں اگر کوئی ایک جانباز کام آتا ہے تو دشمن کے سامنے کوئی دوسرا جانباز اُس کی آنکھوں میں آنکھیں ڈالے کھڑا دکھائی دیتا ہے۔ یومِ پاکستان فقط ایک دن نہیں بلکہ ایک استعارہ ہے جدو جہد کا‘ اعتمادکا‘ اور اُن قربانیوں کے تسلسل کا جو ہمارے سپوت دفاعِ وطن کے لئے پیش کرتے چلے آرہے ہیں۔ یومِ پاکستان کے موقع پر قومی سطح پر متعدد تقریبات کا انعقادکیا جاتا ہے لیکن مسلح افواج کی یومِ پاکستان پریڈ جس انداز سے قوم کے دلوں کو گرماتی ہے الفاظ اُس کا احاطہ کرنے سے قاصر ہیں۔ اس سے قوم کے چہرے اعتماد اور جذبے سے تمتمااُٹھتے ہیں ۔ بلاشبہ اس کے پیچھے اٹھارہ کروڑ عوام کا وہ عزم بھی کار فرما ہے جو وہ اپنے ملک اور سرزمیں کے لئے رکھتے ہیں۔ یوں ہر سال یومِ پاکستان کے آنے سے ایسا محسوس ہوتا ہے گویا قوم میں پھر سے 23 مارچ 1940کا منٹو پارک والا جذبہ عود آیا ہے جو دشمن کے دلوں پر نہ صرف دھاک بٹھانے کے لئے کافی ہوتا ہے بلکہ اُسے یہ باور بھی کراتا ہے کہ اس قوم کا ایک ایک ایک سپوت کٹ تو سکتا ہے لیکن ان کے جیتے جی پاکستان کی سالمیت اور وقار پر کوئی حرف نہیں آسکتا کہ یہ پاکستان کسی ایک طبقے کا نہیں بلکہ اٹھارہ کروڑ عوام کا پاکستان ہے۔ یہ ہم سب کا پاکستان ہے۔


افواجِ پاکستان زندہ باد
پاکستان پائندہ باد

یہ تحریر 164مرتبہ پڑھی گئی۔

TOP