متفرقات

میری ماں میں نے جانا ہے

بوسنیا کے ایک جنگی ترانے کا ترجمہ
سردیوں کی ایک لمبی رات
میری ماں میں نے جانا ہے
اس خاموشی میں صرف اک صدا ابھرتی ہے
اﷲ اکبر
سردیوں کی ایک لمبی رات
میری ماں ‘ میں نے جانا ہے
میرے بزرگوں کی دھرتی آج مدد کو پکارتی ہے
میری ماں 
اگر میں نہ لوٹ سکا
تو میرے انتظار میں گھڑیاں نہ ضائع کرنا
تیری پلکوں سے ایک آنسو 
خامشی سے ڈھلک جائے 
اور پھر فاتحہ مجھے الوداع کہے
یہ میری قربانیوں کا ثمر ہوگا
میری ماں
میں دیکھ سکتا ہوں
کہ اذاں کی صدا کے پروں کی سواری
مجھے جنت کے دروازے کو لے جارہی ہے
اور وہاں

میرے شہر سے آنے والی رمضان کی خوشبوئیں
مجھے خوش آمدید کہہ رہی ہیں
میری ماں
میں نے جانا ہے
کہ میری دھرتی مجھے پکارتی ہے
مگر تجھے اِک عہد کرنا ہوگا
کہ تومیری بہنوں کے آنچل کی لاج رکھے گی
اور میں
قبر کی اتھاہ گہرائیوں سے دیکھنا چاہوں گا
کہ میری بہنیں
بوسنیا کے غازیوں کو جنم دے رہی ہیں
میری ماں! الوداع
میری بہنو ! الوداع
میرے بوسنیا! الوداع
میں نے جانا ہے
کہ جنت کی صدائیں مجھے پکارتی ہیں
اﷲ اکبر، اﷲ اکبر
(ترجمہ :طاہر محمود۔ فروری 1995)

یہ تحریر 176مرتبہ پڑھی گئی۔

TOP