ہلال نیوز

سونو خان سیال گائوں میں''پاکستان برج'' کی تعمیر

یہ کہانی ہے سندھ کے شہر بدین کے ایک چھوٹے سے گائوں سونو خان سیال کی، بدین سے مٹھی کی طرف جاتے ہوئے راستے میں نندونام  کا ایک قصبہ آتا ہے۔ یونین کونسل نندو سے 2 کلومیٹر پہلے گائوں سونو خان سیال واقع ہے، گائوں اور گردونواح کے بیچوں بیچ ایک چھوٹی نہر گزرتی ہے جسے علی واہ کے نام سے جانا جاتا ہے۔ آج سے ایک مہینہ قبل تک اس نہر کے پار جانے کے لئے 2 کلومیٹر تک کوئی پل موجود نہیں تھا۔ گائوں کے رہائشیوں کی زمینیں، رشتہ داریاں حتیٰ کہ قبرستان تک نہر کے دوسری جانب واقع تھا۔ گائوں کا اکلوتا پرائمری سکول بھی نہر کے پار تھا۔ بچوں، بڑوں اور بوڑھوں کے لئے ہر روز نہر کے پار جانا ایک معمول تھا باقاعدہ پل کی عدم موجودگی کے سبب اہلیان علاقہ نے نہر کے بیچوں بیچ لکڑی کے لمبے ٹکڑے رکھ کر نہر پار کرنے کا بندوبست کر رکھا تھا۔ چھوٹے چھوٹے بچے سرکس کے بازی گروں کی طرح ڈرے سہمے ہاتھ میں رسی تھامے پل پار کرتے تھے اور اگر گائوں میں کوئی میت ہوجاتی تو جنازہ بھی اسی پانی کے بیچ سے گزار کر قبرستان پہنچایا جاتا تھا۔ کئی بار معصوم بچے سکول جاتے ہوئے نہر کے پانی میں جاگرے۔
 اصل کہانی شروع ہوتی ہے 7 دسمبر 2019ء کی شام سے، جب نجی ٹی وی چینلز نے اس پل صراط کی خبر عوامی مشکلات کو بیان کرتے ہوئے آن ایئر بریک کی۔ یہ خبر میجر جنرل محمد کاشف آزاد جی او سی 18 ڈویژن تک بھی پہنچی، پاکستان کا عام شہری کسی تکلیف میں ہو اور پاکستان آرمی سکون سے چھائونی میں بیٹھی رہے، کیسے ممکن تھا؟
اُسی رات متعلقہ اداروں کو احکامات جاری کردئیے گئے، اگلی صبح جب سونو خان سیال کے باسیوں کی آنکھ کھلی تو اُن کے مسیحا 16 انجینئر بٹالین کی  صورت گائوں کے باہر نہر پر موجود تھے۔ بدین چھائونی میں موجود 206 بریگیڈ کمانڈر کی زیر نگرانی فوری نئے پل کی تعمیر کے لئے سروے مکمل کیا گیا اور عوامی مشکلات کو مدِنظر رکھتے ہوئے جنگی بنیادوں پر کام شروع کردیا گیا۔
نیکی کے اس کام کی تکمیل کے لئے 18 ڈویژن نے مکمل طور پر اپنے ذرائع  پر انحصار کیا اور وعدے کے مطابق ایک ماہ کے قلیل عرصے میں 60 فٹ طویل اور 5.5 فٹ چوڑا پل تعمیر ہوگیا۔ 22 جنوری 2020ء کی ایک روشن اور چمکتی صبح 206 بریگیڈ کمانڈر بریگیڈیئر سلمان نذر، ایس ایس پی بدین حسن سردار نیازی اور ڈپٹی کمشنر بدین ڈاکٹر حفیظ احمد سیال کی موجودگی میں گائوں سونو خان سیال کے عام شہریوں کے ہاتھوں اس پل کا افتتاح کردیا گیا اور پل عام استعمال کے لئے علاقہ کی عوام کے حوالے کردیا گیا۔
اس موقع پر مقامی افراد کا جوش و خروش دیدنی تھا۔ بچوں نے ہاتھوں میں سبز ہلالی پرچم اٹھائے اپنی مسیحا فوج کا شکریہ ادا کیا، پاکستان برج کے نام سے موسوم یہ پل گائوں سونو خان سیال کے باسیوں کے لئے اُن کی ہر دلعزیز فوج کی طرف سے ایک تحفہ ہے اور اُن کی اپنی فوج کے ساتھ والہانہ محبت کا ثبوت پیش کرتا ہے۔
 

یہ تحریر 75مرتبہ پڑھی گئی۔

TOP