ہلال نیوز

زمانہ جنگ سے بحالی امن کا سفر 

رپورٹ: سلیم دانش

 دہشت گردی کی جنگ میں فتح حاصل کرنا اللہ کے فضل و کرم کے بعد ہماری جانثار افواج کا ایک عظیم کارنامہ ہے اور اب الحمدللہ ففتھ جنریشن وار' ہائبرڈ وار کے میدانوں میں نہ صرف ڈٹ کے کھڑے رہنا بلکہ دشمن کے ہر حربے کو ناکام بنانا بھی ہماری افواج کی جانفشانی کا نتیجہ ہے۔ 


 


یہ کامیابیاں اللہ کی نصرت کے بعد ہماری افواج کے با کردار ہونے کا منہ بولتا ثبوت ہیں۔ 
مخالفین جتنا مرضی پروپیگنڈا کر لیں مگر مقصد پہ فوکس کیے پاک افواج، پاکستان کے دفاع کو ناقابل تسخیر بناچکی ہیں۔ زمانہ جنگ کی تاریک راتوں کو دن کی روشنی میں بدلنے کے لئے ایف سی سائوتھ نے اپنا تن من دھن سب قربان کیا مگر امن کی شمع کو جلا کے ہی دم لیا۔



ایمان، تقوی اور جہاد فی سبیل اللہ کا جذبہ لئے اللہ پہ کامل بھروسے کے ساتھ ہماری افواج پاکستان کے اندرونی و بیرونی دشمنوں کے خلاف ڈٹی ہوئی ہیں۔ ایف سی سائوتھ نے ٹانک جیسے شورش زدہ علاقے میں امن بحالی کے لیے اپنا کردار ادا کیا جہاں ایک لمبے عرصے تک بہت سارا علاقہ نوگوایریا بن چکا تھا۔ جہاں فورسز کے سروں کو کاٹ کر فٹبال کھیلا جاتا تھا جہاں ڈیوٹی کرنا ایک بہت بڑا چیلنج سمجھا جاتا تھامگر ان جیالوں نے اس مشکل چیلنج کو قبول کیا اور سرخرو رہے۔ آئی جی ایف سی سائوتھ میجر جنرل عمر بشیر کی قیادت سیکٹر کمانڈر سائوتھ کے تعاون اور 25 سندھ رجمنٹ کی محنت نے علاقے کی تعمیر و ترقی میں اپنا کردار بھی ادا کیا۔ پانی ٹانک کا ہمیشہ سے مسئلہ رہا ہے اور اسی تکلیف کو محسوس کرتے ہوئے تادم تحریر پندرہ صاف پانی کے فلٹر پلانٹ ٹانک اور گردونواح میں لگائے جاچکے ہیں جہاں لوگ صاف اور ٹھنڈے پانی سے مستفید ہورہے ہیں اور مزید کی تنصیب کا عمل مرحلہ وار جاری ہے۔ اسی طرح سائوتھ وزیرستان کے انٹری پوائنٹ خرگئی جہاں خواتین کے بیٹھنے، پانی پینے، واش رومز کا کوئی انتظام نہیں تھا اب وہاں بہترین واش رومز، ٹھنڈا پینے کا پانی اور انتظارگاہ بنا کر ہزاروں لوگوں کا مسئلہ حل کر دیاگیا ہے۔مزید ان علاقوں میں جہاں علاج معالجے کی سہولت میسر نہیں وہاں متعدد میڈیکل  کیمپ لگائے گئے جہاں فورسز کے ماہر ڈاکٹرز نے چیک اپ کے ساتھ ساتھ دستیاب دوائیاں بھی تقسیم کیں۔ سیکٹر کمانڈر سائوتھ کے اس عمل کو علاقہ میں نہایت قدر کی نگاہ سے دیکھا گیا جس کا مثبت نتیجہ یہ نکلا کہ جو عناصر فورسز کا منفی چہرہ پروپیگنڈے کی شکل میں عوام کو دکھانا چاہ رہے تھے ان کو منہ کی کھانا پڑی اور عوام کے ساتھ افواج کا رشتہ مزید مضبوط ہوگیا۔مزید یہ کہ سیکٹر کمانڈر سائوتھ نے ہمیشہ ممکن حد تک غریبوں، معذوروں، بیوائوں، یتیموں اور قدرتی آفات جیسی مشکلات سے گھرے لوگوں کی بلا تفریق مدد کی۔ عوام اور اداروں کے درمیان تعاون اور تعلقات کے ساتھ ساتھ مسائل کے حل کے لیے سول ملٹری کمیٹی کا انعقاد اپنے مقررہ وقت پر کیا جاتا ہے جس کی سربراہی سیکٹر کمانڈر سائوتھ خود کرتے ہیں جس میں عام عوام اپنے مسائل متعلقہ ادارے کے سربراہ کی موجودگی میں بیان کرتے ہیں۔سیکٹر کمانڈر سائوتھ سکیورٹی برقرار رکھنے کے ساتھ ساتھ نوجوانوں کے کھیل کے میدان بھی آباد دیکھنا چاہتے ہیں اور اسی مقصد کے لیے متعدد بار ایف سی ساؤتھ کے تعاون سے مختلف کھیلوں کے ٹورنامنٹ بھی منعقد کئے گئے اور کھلاڑیوں میں کھیلوں کا سامان بھی تقسیم کیا گیا۔پیشہ ورانہ تربیت کے لئے علاقے میں لوکل مصنوعات کی تیاری پر کام ہو رہا ہے۔ اس کاوش میں جنڈولہ میں فٹبال سلائی یونٹ نے کام شروع کردیاہے جس سے روزگار کے بہت سے مواقع پیدا ہوں گے۔ تعلیم کے شعبے میں سیکٹر ہیڈکوارٹرز سائوتھ کی دلچسپی گراں قدر ہے۔ طلبا کی حوصلہ افزائی کے لیے گومل یونیورسٹی ٹانک کیمپس کے بہترین کارکردگی کے حامل طلبا میں انعامات تقسیم کئے۔ انتہائی نامساعد حالات کے باوجود بھی ایف سی سائوتھ جس لگن اور جذبے سے بحالی امن کے لئے اپنا کردار ادا کر رہی ہے وہ کسی تعریف کا محتاج نہیں اور اہل علاقہ اپنی افواج اور ملک کی سلامتی کے لئے ہمیشہ دعاگو ہیں کیونکہ افواج ہیں تو ملک ہے افواج نہیں تو ہم نہیں۔ آج کچھ اندرونی و بیرونی ملک دشمن عناصر اپنا پورا زور لگا رہے ہیں کہ کسی طرح عوام اور افواج میں دوریاں اور غلط فہمیاں پیدا کی جائیں مگر ہمیشہ کی طرح ان کو منہ کی کھانا پڑے گی۔

یہ تحریر 162مرتبہ پڑھی گئی۔

TOP