متفرقات

دیس بدیس کے کھانے

مصالحے دار بریڈ کباب

یہ کباب میرے ذہن کی اختراع ہیں۔ ایک زمانے میں مجھے نئی اور منفرد ڈشنز بنانے کرنے کا بے حد شوق ہوا کرتا تھا۔ یہ ڈش بھی ان ہی میں سے ہے۔ ٹی وی پر اپنے کوکنگ شو میں بھی سکھا چکی ہوں۔

اشیاء

چار عدد بریڈ سلائیسز(Slices) (یا حسب ضرورت)

چار عدد ہری مرچیں باریک کٹی ہوئی

چار کھانے کے چمچ ہرا دھنیا باریک کٹا ہوا

چار دہی کے کھانے کے چمچ

چار سوجی کے کھانے کے چمچ

چار چمچ لیمن جوس

ایک چائے کا چمچ یا حسب ذائقہ لال مرچ

ایک چائے کا چمچ گرم مسالہ پوڈر

دو عدد چکن کیوبز

ترکیب

بریڈ سلائیسز(Slices) کو پانی میں بھگو کر فوراً نکال لیں اور ہاتھوں سے دبا کر پانی نچوڑ دیں۔

لیمن جوس کو گرم کر کے دونوں کیوبز کو گھول لیں۔ (بغیر گرم کئے وہ گھلتی نہیں ہیں)

کیوبز اور دیگر تمام اجزاء نرم شدہ بریڈ سلائیسز(Slices) میں اچھی طرح ملائیں۔

ایک کھانے کے چمچ کے برابر مرکب کو ہاتھوں میں لے کر کبابوں کی شکل دے دیں۔

فرائنگ پین میں تیل گرم کر کے کبابوں کو تل کر گولڈن براؤن کر لیں۔

سلاد کے ساتھ گرم گرم بریڈ کباب پیش کریں۔

نوٹ: چکن کیوبز کی جگہ چکن پوؤڈر بھی ڈالا جا سکتا ہے۔ جو بازار میں عام مل جاتا ہے۔ چونکہ کیوبز میں نمک شامل ہوتا ہے اس لئے مزید نمک نہ ڈالیں۔

 

المنڈ سوپ

بظاہربڑا عجیب نام ہے۔ مگر جب اس سوپ کا میں نے ترکی کے دورے میں تجربہ کیا تو بہت اچھا لگا۔ جس ملک کی کوئی ڈش مجھے اچھی لگے تو میں اس کی ترکیب بھی حاصل کر ہی لیتی ہوں۔ خواہ شیف سے کروں یا ککنگ بُک خرید کے آزماؤں۔

اشیاء

(ایک کپ گری بادام (بھگو کر چھلکا اتار کے باریک پسے ہوئے

ایک کپ دودھ

تین کپ چکن یخنی

1/3کپ تازہ کریم

1/4کپ میدہ +ایک کھانے کا چمچ مکھن

1/2 کپ تازہ بریڈ کرامز

نمک اور سفید مرچ حسب ذائقہ

کٹے ہوئے پارسلے یا ہرادھنیا

ترکیب

ایک ساس پین میں دودھ‘ پسے ہوئے بادام‘ بریڈ کرامز ڈال کر گرم کریں۔

آنچ سے ہٹا کر رکھ دیں اور دوسرے پین میں مکھن گرم کر کے ہلکی آنچ پر میدہ بھونیں اور پھر دودھ کو باداموں والے مرکب میں ڈال دیں۔

اب دوبارہ آنچ قدرے دھیمی کر کے پانچ منٹ پکنے دیں۔

اب نمک‘ سفید مرچ اور کریم شامل کر دیں۔

سوپ کے پیالوں میں ڈال کر کٹے پارسلے یا تازہ دھنیا کے پتے سجا دیں۔

منفرد اور غذائیت سے بھرپور سوپ پیش کر کے داد وصول کریں۔

 

 

ٹوٹکے

زکام کا زور کم کرنے کے لئے بیسن کی روٹی یا پکوڑے‘ سوجی کا پتلا سا حلوہ خوب گرم گرم کھانے سے شدت میں کمی آئے گی۔

تھکی ہوئی آنکھوں پر برف کی ڈلیاں رومال میں لپیٹ کر رکھنے سے سکون ملتا ہے یا استعمال شدہ ٹی بیگز کو فریز میں ٹھنڈا کر کے رکھنے سے بھی سکون

ملتا ہے۔

جن بچوں کی گرمی یا دھوپ کی وجہ سے نکسیر پھوٹتی ہو انہیں کھیرا ضرور کھلانا چاہئے۔ اس پر نمک اور سیاہ مرچ بھی چھڑکنا چاہئے اس سے زیادہ فائدہ

ہوتا ہے۔

بدہضمی یا فوڈ پوائزن سے قے اور دست آ رہے ہوں اور کوئی دوائی اندر نہ ٹھہرتی ہو تو سرکہ یا لیمن جوس میں نمک ملا کر تھوڑی تھوڑی دیر بعد چٹانے

سے طبیعت بہتر ہونے لگتی ہے۔

یرقان کے مرض میں گنے کا رس پلانا بہت فائدہ مند رہتا ہے۔ املی اور آلو بخارے کا شربت بھی مفید ہوتا ہے۔

قیمہ خریدیں تو فالتو ہڈیاں جو قصائی کے پاس پڑی ہوتی ہیں وہ بھی ضرور لیں اور ان کو فریز میں جمع کرتی جائیں جب کافی جمع ہو جائیں تو ان کی

یخنی بنا لیں اور پھر دالوں اور سبزیوں میں پانی کی جگہ استعمال کریں۔ وافر کیلشیئم حاصل کریں اور ذائقہ بھی۔

موم بتی کو زیادہ دیر تک جلانا مقصود ہو تو ان پر وارنش کر کے خشک ہونے پر جلایا جائے یا پھر جلانے سے قبل موم بتیوں کو کچھ دیر فریزر میں رکھ دیا

جائے تو جلدی نہیں پگھلتی۔

فریز سے منجمد شدہ گوشت اگر نکال کر پکنے کو رکھا جائے تو وہ نا صرف گلنے میں بہت وقت لیتا ہے بلکہ سخت ہو جاتا ہے۔ اس لئے شاپر سمیت پانی کے

پیالے میں ڈال دیں جب نرم ہو جائے تو پھر پکنے کو رکھیں۔

یہ تحریر 57مرتبہ پڑھی گئی۔

TOP