اداریہ

آزادی کا تحفظ۔ ایک مستقل عمل

آزادی ایک نعمت ہے جو قوموں کو انتھک جدوجہد اور قربانیوں سے حاصل ہوتی ہے۔ وطنِ عزیز پاکستان بھی برصغیر کے مسلمانوں نے لاکھوں قربانیوں کے بعد حاصل کیا۔ قائداعظم محمدعلی جناح کی قیادت میں حاصل کیاگیا یہ وطن، برصغیر کے مسلمانوں کے لئے ایسی سرزمین ہے جہاں وہ اپنے آئین، مذہب اور روایات کے مطابق زندگی بسر کررہے ہیں۔یقینا آزادی کی قیمت ہوا کرتی ہے۔ آزادی کا حصول ایک کٹھن مرحلہ ہے تو آزادی کی حفاظت کرنا بھی ایک جہدِ مسلسل ہے۔اس میںدورائے نہیں کہ آزادی کی حفاظت بھی صرف مضبوط اقوام ہی کرسکتی ہیں۔ آج الحمدﷲ پاکستان ایک ایٹمی قوت ہے اور اس کی افواج کا شمار پیشہ ورانہ اعتبار سے دنیا کی بہترین افواج میں کیا جاتا ہے جس کا کئی مواقع پر ہماری افواج نے عملی ثبوت بھی پیش کیا ہے۔ اس میں کوئی شک نہیں کہ صرف دفاعی اعتبار سے مضبوط افواج ہی وطن کی سرحدوں کی حفاظت یقینی بنانے کی اہل ثابت ہوتی ہیں۔ 
 آزادی صرف سرحدوں کی حفاظت کا نام نہیں بلکہ سرحدوں کے اندر قومی سوچ ، فکر اور شعور کی آزادی بھی اتنی ہی ضروری ہے۔ باہمی یگانگت، اخوت اور بھائی چارے کے بل بوتے پرکوئی بھی قوم، ملک کے اندرونی حالات کو پُرامن اور باوقار رکھتے ہوئے قومی ترقی کا سفر جاری رکھتی ہے۔وطنِ عزیز پاکستان کی جغرافیائی پوزیشن ایسی ہے کہ مشرقی اور مغربی سرحدوں کی حفاظت سمیت بہت سے اندرونی مسائل کا بھی سامنا ہے لیکن یہ سب چیلنجز اور مشکلات اُس وقت بے معنی ہو جاتی ہیں جب پوری قوم متحد ہو کر ملک کی حفاظت کو یقینی بنانے کے لئے اُٹھ کھڑی ہوتی ہے۔
 بانی ٔ پاکستان قائداعظم محمدعلی جناح نے18اگست 1947کو عید کے موقع پر اپنے خطاب میں فرمایا''اس میں شک نہیں کہ ہم نے پاکستان حاصل کرلیا ہے لیکن یہ تو محض آغاز ہے۔ اب بڑی ذمہ داریاں ہمارے کندھوں پر آن پڑی ہیں اور جتنی بڑی ذمہ داریاں ہیں، اتنا ہی بڑا ارادہ اور اتنی ہی عظیم جدو جہد کا جذبہ ہم میں پیدا ہونا چاہئے۔ پاکستان حاصل کرنے کے لئے جو قربانیاں دی گئی ہیں، جو کوششیں کی گئی ہیں، پاکستان کی تشکیل و تعمیر کے لئے بھی کم از کم اتنی قربانیوں اور کوششوں کی ضرورت پڑے گی۔ حقیقی معنوں میں ٹھوس کام کا وقت آپہنچا ہے اور مجھے پورا یقین ہے کہ مسلمانوں کی ذہانت و فطانت اس بارِ عظیم کو آسانی سے برداشت کر لے گی اور اس بظاہر پیچیدہ اور دشوار گزار راستے کی تمام مشکلات کو آسانی سے طے کر لے گی۔'' یقینا بانی ٔ پاکستان کو اس امر کا ادراک تھا کہ آزادی ایک بہت بڑی قومی ذمہ داری ہے جس سے عہدہ برآ ہونے کے لئے قوم کے ہر فرد کو اپنا کردار ادا کرنا ہوگا۔ الحمدﷲ پاکستان کے سبھی ادارے اور افراد اپنے اپنے حصے کا کام کرتے ہوئے ملک کو ترقی کی شاہراہ پر گامزن رکھے ہوئے ہیں جو ایک خوش آئند امر ہے۔ یقینا یہ قومی یکجہتی ہی ہے جو ہمارے مضبوط اور خوشحال مستقبل کی ضامن ہے ۔ ہم کندھے سے کندھا ملائے پاکستان کو قائد کے خوابوں کی تعبیر بنائیں گے، انشاء اﷲ۔ پاکستان زندہ باد ||

یہ تحریر 64مرتبہ پڑھی گئی۔

TOP