ہلال نیوز

چیف آف آرمی سٹاف کا پی اے ایف آپریشنل بیس کا دورہ اور جاری مشق انڈس شیلڈ2023کا مشاہدہ

گزشتہ دنوں چیف آف آرمی سٹاف جنرل سید عاصم منیرنے پاک فضائیہ کی آپریشنل ایئر بیس کا دورہ کیا اور وہاں جاری فضائی مشق انڈس شیلڈ 2023کا مشاہدہ کیا۔
ترکی، آذربائیجان اور ہنگری کے ائیر چیفس بھی معزز مہمانوں میں شامل تھے جنہوں نے پی اے ایف کی 14 ملکی میگا فضائی مشق کا مشاہدہ کیا۔



آرمی چیف کی آمد پر سربراہ پاک فضائیہ ائیر چیف مارشل ظہیر احمد بابر سدھونے ان کا استقبال کیا۔ بعد ازاں ان کا تعارف غیر ملکی معززین اور پاک فضائیہ کے پرنسپل سٹاف آفیسرز سے کرایا گیا۔ چیف آف آرمی سٹاف کو غیر ملکی معززین کے ہمراہ ایئر پاور سینٹر آف ایکسی لینس کی تربیتی سہولت اور مشق کے وسیع دائرہ کار کے بارے میں ایک جامع بریفنگ دی گئی جس کا مقصد فضائی جنگ کے جدید تصورات کو مستحکم کرنا،حصہ لینے والی فضائی افواج کے درمیان باہمی تعاون کو فروغ دینا اور باہمی تعاون کو بڑھانا ہے۔اس موقع پر خطاب کرتے ہوئے ائیر چیف نے جنرل سید عاصم منیرکی طرف سے پاک فضائیہ کی جدید کاری کی مہم میں بھرپور تعاون کی تعریف کی ۔
مشق کی اہمیت پر روشنی ڈالتے ہوئے ائیر چیف نے کہاکہ مشق انڈس شیلڈ حصہ لینے والی فضائی افواج کو اپنی بے مثال مہارت اور آپریشنل صلاحیتوں کا مظاہرہ کرنے کا ایک منفرد موقع فراہم کرتی ہے۔ انہوں نے پی اے ایف کے ایئر پاور سینٹر آف ایکسی لینس کی جانب سے اس میگا مشق کو کامیابی کے ساتھ ترتیب دینے، فضائی جنگی مشنز کی باریک بینی سے نگرانی، طرز عمل، تجزیہ اور تشخیص کو یقینی بنانے کے لیے کیے گئے متحرک کردار کو سراہا۔ پاک فضائیہ کے سربراہ نے اس بات پر روشنی ڈالی کہ مرکز کے جدید ترین انفراسٹرکچر اور وسائل نے اس اہم فضائی مشق کی کامیابی کو یقینی بنانے میں اہم کردار ادا کیا ہے۔
مشقوں کے شرکاء سے خطاب کرتے ہوئے چیف آف آرمی سٹاف نے فضائی جنگ کی مسلسل بدلتی ہوئی حرکیات(dynamics) کے درمیان مشترکہ مقاصد کے حصول میں کثیر القومی فضائی مشقوں کی بنیادی اہمیت پر زور دیا۔ انہوں نے مشق کے شرکاء کی پیشہ ورانہ مہارت کی تعریف کی اور ایئر پاور سینٹر آف ایکسی لینس کی اس کی جدید ترین سہولیات اور اتنے بڑے پیمانے پر فضائی مشق کے انعقاد میں اہم کردار ادا کرنے پرتہہ دل سے تعریف کی۔ چیف آف آرمی سٹاف نے ائیر چیف کی متحرک قیادت کو بھی سراہا جن کے پختہ عزم اور انتھک کوششوں نے اس مشق کو خطے کی سب سے بڑی فضائی مشقوں میں سے ایک ہونے کی راہ ہموار کی۔ فضائی جنگ کی بدلتی ہوئی نوعیت کو تسلیم کرتے ہوئے، انہوں نے سائبر، مصنوعی ذہانت، آئی ٹی، خلائی اور خصوصی اختراعات کی ڈومین میں سمارٹ انڈکشنز اور جدید ترین ٹیکنالوجیز کو شامل کرنے کے لیے ایئر چیف مارشل ظہیر احمد بابر سدھو کے وژن کو سراہا۔
 

Read 232 times


TOP