ہلال نیوز

پاک فوج کی گالف میں بین الاقوامی سطح تک کامیابی

گالف کے ممتاز کھلاڑی سپاہی محمد نعیم کی کامیابیوں کے حوالے سے کیپٹن سائلہ ز  ینب کی رپورٹ

کسی بھی کھیل کی مہارت اور کامیابی کی بنیاد روزانہ کی پریکٹس اور نظم و ضبط ہوتی ہے۔ دنیا کا کوئی بھی کھیل ہو لیکن محنت، لگن اور سیکھنے کے شوق سے ہی شاندار مہارت حاصل ہوتی ہے۔ ایسے ہی پاکستانی فوج اپنی اعلیٰ کار کردگی اور نظم و ضبط کی بنیاد پر ایک طاقتور فوج مانی جاتی ہے۔ پاکستان فوج کا یہ نظم و ضبط افسران اور سپاہیوں کی ذاتی زندگیوں کی بھی عکاسی کرتا ہے۔ اسی خاصیت کی بنا پر سب افسران اور سپاہی ذہنی اور جسمانی چستگی اور کھیلوں کے داعی ہیں۔ کچھ حضرات تفریحی کھلاڑی ہیں جبکہ چند قومی اور بین الاقومی سطح کے مقا بلے بھی کھیلتے ہیں۔ 



 پاک فوج میں گالف کو مقبول کھیل مانا جاتا ہے۔ گالف اور آرمی میں ایک مضبوط اور مخصوص رشتہ ہے ۔ کہتے ہیں کہ گالف میں سب سے ضروری خود اعتمادی اور ذہنیت ہے کیونکہ یہ لامتناہی حد تک پیچیدہ ہے۔ یہ ایک ہی وقت میں تسلی بخش بھی ہے اور دیوانہ وار بھی۔ یہ کھیل سہی معنوں میں صبر اور استقامت سکھاتا ہے۔
یہ کھیل سینیئر افسران میں تو مقبول تھا ہی ایسے میں پاکستان آرمی کے ایک سپاہی نے پشاور گالف کلب سے نہ صرف گالف سیکھا، اس میں شاندار مہارت بھی حاصل کی جو کہ قومی اور بین الاقوامی سطح پر بھی نمایاں رہی۔ 
 سپاہی محمد نعیم، جن کا تعلق پشاور سے ہے، بچپن سے ہی گالف کے گرویدہ تھے لیکن کم وسائل اور کسی پلیٹ فارم کی عدم موجودگی کی وجہ سے کھیل میں مہارت حاصل نہ کرسکے لیکن 2008 میں فوج میں شمولیت اختیار کرنے کے بعد پشاور گالف کلب میں اپنے شوق میں مہارت حاصل کی۔ نعیم باقاعدہ پریکٹس کے لیے گالف کلب جاتا رہا جہاں وہ دوسرے افسران کے ساتھ گالف کھیلتا تھا یہاں تک کہ نعیم لوکل مقابلے بھی جیتنے لگا۔بہت سارے چھوٹے مقابلے جیتنے کے بعد، نعیم نے پہلی دفعہ بین الاقوامی سطح پر بحرین میں Military Sports Association کے تحت تیسری پوزیشن حاصل کرکے کانسی کا تمغہ جیتا۔ اس موقع پر پاک فوج نے ان کی بھرپور حمایت کی۔ یہ کامیابی قومی  اور بین الاقوامی سطح پر کامیابی کی سیڑھی پر پہلا قدم تھا۔ انہوں نے 2015 میں KPK Amateur Championship میں گولڈ میڈل حاصل کیا۔ پشاور گالف کلب کی انتظامیہ نے نعیم کی یہ صلاحیت دیکھتے ہوئے نعیم کی مستقبل کے ہر مقابلے میں بے حد حمایت اور مدد فراہم کی۔ اسی سال نعیم نے ایک  قومی اور دو بین الا قوامی مقابلے جیتے۔ 2015 میں ہی ہونے والے All Pakistan Open Golf Championship میں پہلی ٹرافی حاصل کی۔
 یہی جذبہ دیکھتے ہوے پاک فوج نے نعیم کو سری لنکا بھیجا جہاں ملک کا نام روشن کرتے ہوے نعیم دوسرے نمبر پر رہے اورچاندی کا تمغہ حاصل کیا اور سری لنکا میں ہی منعقد ضیاالحق ٹرافی میں سونے کا تمغہ حاصل کیا۔ سپاہی نعیم کی صلاحیتوں کو پہچانتے ہوئے پاکستان آرمی نے ہالینڈ کے ایک نمایاں مقابلے World Military Championship کے لیے نعیم کی مالی کفالت بھی کی، جس میں سپاہی نعیم نے دوسری پوزیشن حاصل کی۔ سپاہی نعیم کی کامیابیوں کا یہ سلسلہ بتدریج جاری و ساری ہے۔ حال ہی میں منعقد ہونے والے COAS Open Golf Championship میں سپاہی نعیم نے تیسری پوزیشن حاصل کی۔ سپاہی نعیم ابھی نہ صرف پشاور گالف کلب میں کھیلتا ہے بلکہ بہت سے افسران سمیت دیگر لوگوں کو سکھاتا بھی ہے۔ سپاہی نعیم کے بہت سارے اعزازات میں سے ایک اعزاز جنرل راحیل شریف کے ساتھ کھیلنا بھی ہے۔

اس موقع پر یہ کہنا بے جا نہ ہوگا کہ جہاں پاک فوج کے افسران اپنی جسمانی اور ذہنی صلاحیتوں کو پالش کرتے ہیں وہیں ان جیسے سپاہی اور جوان بھی اپنی مہارتوں کو عمدہ بناتے ہیں۔ پشاور گالف کلب میں افسران، سردار صاحبان اور سپاہیوں کی کثیر تعداد آتی ہے۔ پاک فوج جہاں کھیلوں میںنظم و ضبط سکھاتی ہے وہیں انسانیت کی عزت اور برابری کا بھی سبق دیتی ہے۔  

Read 134 times


TOP