ہلال نیوز

اعلیٰ و معیاری تعلیم و تربیت  میں کوشاں کیڈٹ کالج سپنکئی 

کیڈٹ کالج سپنکئی اپریل 2012ء میں محسود قبیلے کے پرزور مطالبے اورعلاقائی ضرورت کے تحت اُس وقت شروع کیا گیا جب سابق چیف آف آرمی سٹاف جنر ل اشفاق پرویز کیانی نے اِس علاقے کے دورے کے دوران کالج بنانے کا وعدہ کیا تھا۔ موجودہ کیمپس کا افتتاح سابق چیف آف آرمی سٹاف جنرل راحیل شریف نے 20 اکتوبر 2016 ء کوکیا تھا۔
 کالج کا کل رقبہ تقریبا ً 723 مربع کنال پر محیط ہے جو قبائلی عمائدین اور مشران و ملکان نے وزیرستان کے بچوں کے بہتر مستقبل کے لئے وقف کردیا ہے۔ کیڈٹ کالج سپنکئی میں اس وقت کل کیڈٹس کی تعدا د تقریباً380 کے قریب ہے جن میں 80% کیڈٹس کا تعلق وزیرستان سے جبکہ 20% کیڈٹس کا تعلق ملک کے دوسرے علاقوں سے ہے۔ 



کیڈٹ کالج سپنکئی اپریل 2012سے تمام کیڈٹس کو بلا امتیاز اعلیٰ و معیاری تعلیم فراہم کرنے میں کوشاں ہے۔ کیڈٹ کالج سپنکئی طلباء میں اعلیٰ تعلیم و تہذیب اور اچھے باوقار شہری کی خصوصیات پیدا کرنے میں پیش پیش ہے۔ کالج، کیڈٹس کو پرامن اور پاک ماحول مہیا کرنے، صبر و تحمل کا جذبہ بیدا رکرنے، پاکستانی ثقافت اور عالمی نقطہ نظر کی سمجھ بوجھ عطا کرنے، تعصبات اور انتہا پسندی جیسے قبیح فعل سے نوجوان ذہنوں کو پاک کرنے، متحرک قیادت پیدا کرنے، احساسِ محرومی کا خا تمہ کرکے انسانی خدمت کا جذبہ پیدا کرنے، مسقبل کے چیلنجوں سے نمٹنے کی صلاحیت پیدا کرنے اور محب وطن پاکستانی بنا نے جیسے اہم کاموں میں مصروف عمل ہے۔
کیڈٹ کالج سپنکئی سے اب تک 6 انٹریز، جن میں طلباء کی کل تعدا د 187 ہے، کالج سے فارغ التحصیل ہو چکی ہیں۔ ان میں 24 کیڈٹس پاکستان آرمی، 1 کیڈٹ پاکستان نیوی اور2 کیڈٹ پاکستان ائیر فورس میں بطور کمیشنڈ آفیسر، کمیشن لے چکے ہیںجو اس وقت مادروطن کے دفاع پر ملک کے مختلف حصوں میں تعینات ہیں۔ اس کے علاہ کیڈٹ کالج سپنکئی کے کیڈٹس ملک کے اعلیٰ تعلیمی اداروں، یونیورسٹیوں اور کالجوں میں زیر تعلیم ہیں جن میں انجینئرنگ یونیورسٹی میں 12، میڈیکل کالج میں 16، آئی بی اے (انسٹیٹیوٹ آف بزنس ایڈمنسٹریشن کراچی) میں 7، لاء کالج میں4جبکہ 36 مزید کیڈٹس ملک کی اعلیٰ اور بہترین یونیورسٹیوں میں زیر تعلیم ہیں اور ان تمام کیڈٹس میں بیشتر کا تعلق جنگ زدہ جنوبی وزیرستان سے ہے۔
کیڈٹ کالج سپنکئی اپنے کیڈٹس کو وہ تما م سہولیات فراہم کرتا ہے جو ملک کے دوسرے بڑے شہروں میں طلباء کو حاصل ہیں۔ کالج میں جدید سائنسی لیبارٹریز موجود ہیں جن میں کیڈٹس نت نئے سائنسی پروجیکٹ پر کام کر رہے ہیں۔ ان پراجیکٹس میں ہینڈ سینیٹائزز، صابن اور سرف کی تیاری، ڈرونز کی تیاری،لیز ر سکیورٹی سسٹم، انفراریڈ الیکٹرونک سسٹم، ہائی ڈرولک ایکٹیویٹر سسٹم،مقامی سطح پر بائیو گیس کی تیاری، واٹر فلٹریشن سسٹم، وغیرہ جیسے پروجیکٹ شامل ہیں۔اس کے علاوہ جدید آئی ٹی لیب موجودہے۔ جہاں کمپیوٹر کے جدید کورس کیڈٹس کو پڑھائے جاتے ہیں۔ جبکہ کمپوٹر لیب میں کیڈٹس E- Learning کلاسزسے بہترین نوٹس، کتابیں، تخلیقی سوچ اور معلومات تک رسائی حاصل کر سکتے ہیں۔ اس کے علاوہ ایک عمدہ لائبریری بھی کیڈٹس کی علمی ضروریات کو پورا کرنے اور تخلیقی سوچ کو پروان چڑھانے کے لئے تعمیر کی گئی ہے۔ 



جیسا کہ آج کا دور جدید ٹیکنالوجی کا دور ہے۔ موجودہ پرنسپل کرنل طارق سہیل کی کاوشوں سے اس سلسلے میں پاکستان سائنس فاؤنڈیشن کے ساتھ باہمی اشتراک کا سلسلہ آگے بڑھا ہے اور پاکستان سائنس فاؤنڈیشن کیڈٹ کالج سپنکئی میں STEM لیب قائم کرے گا جس میں سائنس کی جدید ایپلیکشن اور سائنس ریسرچ جیسی سہولیات میسر ہوں گی۔ اس کے علاوہ مستقبل قریب میں کالج گوگل ایجوکیشن پروگرام میں اور مائیکرسوفٹ سرٹیفیکیشن پروگرام اور پاکستان سپیس پروگرام میں شامل ہونے جا رہا ہے جس سے کالج کے کیڈٹس اور مقامی لوگ بھی استفادہ حاصل کر سکیں گے۔ 
نصاب کے ساتھ کالج ہم نصابی اور غیر نصابی سرگرمیوں میں بھی بڑھ چڑھ کر حصہ لیتا ہے۔ کالج میں فٹ بال، کرکٹ، والی بال، باسکٹ بال، ہاکی اور لانگ ٹینس جیسے کھیلوں کے لئے جدید سہولتوں سے مزین گراؤنڈز بنائے گئے ہیں۔ کھیل کے میدان میں بھی کیڈٹ کالج سپنکئی کے کیڈٹس نے انڈور اور آؤٹ ڈور مقابلے جیتے ہیں۔ اس کے علاوہ کیڈٹس میں خود اعتمادی پیدا کرنے کے لئے کالج میں تقریری مقابلے، نعت و قرأت کے مقابلے، جنرل نالج کے مقابلے اور مضمون نویسی کے مقابلے ہوتے رہتے ہیں جس سے کیڈٹس کو آگے بڑھنے اور اپنی صلاحیتوں کا لوہا منوانے کا موقع ملتا ہے۔ کالج انتظامیہ نے کیڈٹس کی تعلیمی سرگرمیوں کو مزید نکھارنے کے لئے اور ان میں صحت مندانہ تعلیمی مقابلے کا رجحان بیدار کرنے کے لئے نقد انعامات اور اعزازی شیلڈز دینے کا سلسلہ بھی شروع کردیا ہے۔ 
اس کے علاوہ کالج نے ذہین اور مستحق کیڈٹس کو خصوصی وظائف دینے کا سلسلہ بھی شروع کیا ہے جس کا مقصد مستحق کیڈٹس کی مالی معاونت کرنا ہے تاکہ وہ اپنی تعلیمی سرگرمیوں کو بلا تعطل جاری رکھ سکیں۔یہ وظائف خالص میرٹ کی بنیاد پر دیئے جا رہے ہیں ۔
اس پروگرام میں ایک ٹیلنٹ سکالرشپ ہے جبکہ دوسرا نادار کیڈٹس کے لئے خصوصی طور پر شروع کیا گیا سکالرشپ پروگرام ہے۔ اس پروگرام میں کالج سے باہر ہماری کمیونٹی اور کچھ ہائی آفیشل لوگ کیڈٹس کو سپانسر کر رہے ہیں۔ 
کیڈٹ کالج سپنکئی اس وقت ملک کے دیگر بہترین تعلیمی اداروں کی طرح کیڈٹس کی عمدہ کردار سازی میں مصروف عمل ہے اور آئندہ بھی اس قسم کی سرگرمیوں کو جاری رکھنے کا عہد کئے ہوئے ہے۔
 موجودہ پرنسپل کرنل طارق سہیل کا مقصد ہے کہ وزیرستان میں ہر بچہ علم حاصل کرے اس کے لئے انہوں نے ضلعی انتظامیہ اور محکمہ تعلیم کے ساتھ مل کر 4سکول لیے ہیں جن کے یونیفارم اور دیگر اخراجات کیڈٹ کالج سپنکئی ادا کرتی ہے۔
 

Read 161 times


TOP