اداریہ یومِ پاکستان پریڈ دو ہزار اٹھارہ

Published in Hilal Urdu

وطنِ عزیز میں 78واں یومِ پاکستان ملی جوش و خروش کے ساتھ منایا گیا۔ یوں منٹو پارک لاہور میں 23مارچ 1940کو منظور ہونے والی قرارداد کی گونج 2018 کے پاکستان بھر میں سنائی دے رہی تھی کہ یہ مملکتِ خداداد اس قرارداد کے منظور ہونے کے ٹھیک سات برس بعد1947میں معرضِ وجود میں آ گئی تھی۔ یومِ پاکستان کے موقع پر ملک بھر میں قومی تقریبات کا انعقاد کیا جاتا ہے لیکن سب سے بڑی قومی تقریب مسلح افواج کی شاندار پریڈ ہوتی ہے جو وفاقی دارالحکومت میں منعقد کی جاتی ہے۔ اس شاندار پریڈ میں دفاعی طاقت اور قومی اتحاد کا بھرپور مظاہرہ اور مستقبل کے باوقار اور روشن پاکستان کا نظارہ دیکھنے میں آیا جو ٹی وی سکرین کی وساطت سے دنیا بھر میں دیکھا گیا۔ وفاقی دارالحکومت میں ہونے والی اس پریڈ میں پہلی مرتبہ اردن، متحدہ عرب امارات کے دستوں اور ترکی کے گن شپ ہیلی کاپٹروں نے شرکت کی۔ صدرِ مملکت، وزیرِاعظم پاکستان اور مسلح افواج کے سربراہان نے سلامی کے چبوترے پر مسلح افواج سے سلامی لی۔ پاک فوج کے جوانوں کے قدموں کی دھمک، پاک نیوی کے دستوں میں شامل سپوتوں کے تمتماتے چہرے، پاک فضائیہ کے جے ایف 17طیار وں کی گھن گرج اور سب سے بڑھ کر پاکستان کے نڈر کمانڈوز کا 'اﷲ ہو' کا نعرہ بلند کرتے ہوئے مارچ پاسٹ دشمن پر ہیبت طاری کرنے کے لئے کافی تھا۔ یہ قومی پریڈ جہاں ایک قومی دن کی اہمیت کو اجاگر کرتی ہے وہاں بین الاقوامی سطح پر ایک پیغام بھی دیتی ہے کہ پاکستانی قوم اپنے دفاع سے غافل نہیں ہے۔ اگر پاکستانی قوم قائداعظم کی قیادت میں ایک پرچم تلے جمع ہو کر اپنے لئے الگ سرزمین حاصل کرنے میں کامیاب ہو سکتی ہے تو وہ الحمد ﷲ اس قابل بھی ہے کہ اس سرزمین کی طرف میلی آنکھ اٹھانے والوں سے نبرد آزما ہو سکے۔


یومِ پاکستان پریڈ میں شامل مسلح افواج کے دستوں اور پریڈ گرائونڈ میں موجود پاکستانی قوم کے ایک جم غفیر سے خطاب کرتے ہوئے صدرِمملکت ممنون حسین نے کہا کہ 23مارچ جیسا کوئی اور دن نہیں ہے کہ اس روز ہمارے بزرگوں نے فیصلہ کیا تھا کہ غیرملکی حکمرانوں اور متعصب اکثریت کے غاصبانہ طرز عمل کو شکست دے کر اپنی قسمت کے مالک خود بنیں گے۔ انہوں نے کہا کہ آج کی یہ شاندار پریڈ ہمارے خوابوں ہی کی ایک حسین تعبیر ہے۔ انہوں نے امن کے قیام کے لئے افواجِ پاکستان کی کاوشوں کو سراہا اور کہا کہ افواجِ پاکستان نے آپریشن ضرب عضب اور ردالفساد جیسی کارروائیوں کے ذریعے دہشت گردی کے چیلنجوں کا مقابلہ پورے عزم اور ہمت سے کیا ہے جسے قوم قدر کی نگاہ سے دیکھتی ہے۔انہوں نے ان کاوشوں اور اولوالعزمی کا مظاہرہ کرنے پر مسلح افواج اور قانون نافذ کرنے والے اداروں کے لئے ایک نئے میڈل ''تمغۂ عزم'' کا اعلان کیا اور کہا کہ قوم کی قربانیوں سے ملک میں امن بحال ہو چکا ہے۔ انہوں نے بھارت کو تنبیہہ کرتے ہوئے کہا کہ اس کی پالیسیوں کی بدولت خطے کا امن دائو پر لگ چکا ہے۔ انہوں نے بھارت کو خبردار کیا کہ وہ کشمیریوں پر ظلم بند کرے۔


رواں برس اسلام آباد میں منعقدہ مسلح افواج کی پریڈ اس حوالے سے بھی خاص اہمیت رکھتی ہے کہ اس میں برادر ملک سری لنکا کے صدر میتھری پالاسِری سینا نے بطور خاص شرکت کی جس سے بین الاقوامی سطح پر یہ پیغام گیا ہے کہ پاکستان خطے کے ممالک کے ساتھ کندھے سے کندھا ملا کر آگے بڑھنے کا خواہاں ہے لہٰذا خطے کے وہ ممالک جو قبیح عزائم رکھتے ہیں، اور خطے کے امن کو پامال کرنے کے درپے رہتے ہیں، انہیں خطے میں بالخصوص اور دنیا میں بالعموم امن کے قیام کی خاطر اپنا منفی رویہ ترک کرتے ہوئے مثبت طرزِ فکر اختیار کرنا ہو گا۔ بین الاقوامی طاقتوں کو بھی اس بابت اپنا فعال کردار ادا کر کے منفی قوتوں کی سرکوبی کے لئے پاکستان سمیت خطے کے ان دیگر ممالک کی معاونت کرنی چاہئے جو امن کے لئے قربانیاں دے رہے ہیں۔ پاکستان کی افواج اور اس کی قوم نے قیام امن کے لئے گزشتہ ڈیڑھ دہائی میں جو قربانیاں دی ہیں آج اس کا ثمر ہے کہ پوری قوم نے ملک بھر میں یوم پاکستان کی تقریبات کو پرجوش انداز میں منایا ہے اور دنیا کو بتا دیا ہے کہ ہم زندہ قوم ہیں ، پائندہ قوم ہیں۔
پاک افواج زندہ باد
پاکستان پائندہ باد

Read 90 times

Leave a comment

Make sure you enter the (*) required information where indicated. HTML code is not allowed.

Follow Us On Twitter