رپورٹ: میجر صبور احمد

پاک آرمی میوزیم راولپنڈی اپنی شانداروجاذبِ نظر عمارت کے ساتھ جنر ل ہیڈ کوارٹرزکے قریب واقع ہے۔ یہ ہمار ے قیمتی عسکری ورثے اورتاریخ کا عکاس ہے۔ اس کا قیام 1961میں عمل میں لایا گیا جس کا بنیادی مقصد پاک فوج کے عسکری ورثے کا تحفظ کرنا تھا۔ تاہم وقت گزرنے کے ساتھ ساتھ یہ ضرورت محسوس کی گئی کہ میوزیم کو منظم تاریخی ترتیب میں پیش کیاجائے تا کہ یہ سیاحوں کے لئے مزید دلچسپی،کشش اور معلومات کا باعث بن سکے۔ چنانچہ 2009میں کوارٹر ماسٹر جنرل نے پاکستان آرمی میوزیم کی تعمیر ِ نو کی ذمہ داری آرمی ہیرٹیج فائونڈیشن کے ڈائریکٹر جنرل اور ڈائریکٹر پاک آرمی میوزیم کو سونپی تاکہ میوزیم کوتخیلاتی انداز میں جدیدخطوط پر استوار کیا جائے۔ اس مقصد کے حصول کے لئے ملکی شہرت کے حامل ماہر ِ تعمیرات، اندرونی تزئین وآرائش کے ماہرین اور مواصلاتی ماہرین پرمشتمل ایک تجربہ کارٹیم کی خدما ت حاصل کی گئیں۔ میوزیم کا باقاعدہ افتتاح 26 نومبر2013میں کیا گیا۔
میوزیم میںاگست 1947سے لے کراب تک کی پاک فوج کی تاریخ کو
Artistic beauty and subtlety
پیش کیاگیا ہے۔ یہ 14گیلریوں پر مشتمل ہے۔ جس میں پاک فوج کی جامع تاریخ اور قربانیوں کو پیش کیا گیا ہے۔ میوزیم زیریں منزل، بالائی منزل،اندرونی برآمدوں اور بیرونی نمائش پر مشتمل ہے۔

pakarmymuseum.jpg
داخلی دروازے پر صوبیدار خدا داد کا مجسمہ اپنی تمام تر شان و شوکت کے ساتھ ایستادہ ہے ۔وہ جنوبی ایشیا کے پہلے مسلمان سپاہی تھے جنہیں جنگ عظیم اوّل میں حیرت انگیز بہادری کے جوہر دکھانے پر وکٹوریہ کراس سے نوازا گیا۔ جبکہ میوزیم کے باہر تاریخی اور واقعاتی اعتبار سے استعمال شدہ فوجی گاڑیاں اور ٹینک نمائش کے لئے رکھے گئے ہیں۔ ان میں پاک آرمی کے زیر استعمال اولین ٹینک سے لے کر آج تک کے ٹینک شامل ہیں۔جس میں فیرٹ سکائوٹ کار ، ایم۔ 4 اسٹیورٹ ،ایم فوراے۔1شرمن اور ایم۔ 8 4ٹینکوں کے علاوہ فیلڈ اور اینٹی ایئرکرافٹ گنیں ، ہوٹرز، ایئر کرافٹ،انجینئرنگ کا سازوسامان اور جیپیں موجود ہیں۔ ان میں سے چند ایک چیزیں دورانِ جنگ قبضے میں لی گئیں۔


زیریںمنزل سات گیلریوں پر مشتمل ہے جو پاک فوج کی بے مثال قربانیوںاور بہادری کے لازول کارناموں کو تاریخی اور واقعاتی اعتبار سے جامیعت کے ساتھ پیش کرتی ہے۔زیریں منزل ٹائم لائن سے شروع ہوتی ہے جو پاکستان کی مختصر تاریخ ،دورِ حکومت ،سربراہ مملکت، وزرائے اعظم اورکمانڈر ان چیفس/چیف آف دی آرمی سٹاف کے کلیدی کارناموں پر روشنی ڈالتی ہے۔ پہلی تین گیلریاں 1948، 1965 اور 1971کی جنگوںکے تمام اہم واقعات کو نقشوں، ہتھیاروں اور مجسموں کی مدد سے دل نشین انداز میںپیش کرتی ہیں۔


کمانڈ پوسٹ میں گو لوں کی گھن گرج اور سیاچن گلئشیرکے روح پرور مناظرسیاحوں کے حوصلوں کو تازگی بخشتے ہیں۔ نشانِ حیدر گیلری کا منظر ، بہادری کے اعلیٰ ترین اعزاز، نشانِ حیدر پانے والوں کی تصاویر،تعریفی اسناد ، شہدا ء کے ذاتی سامان کے پرنور منظر کی بدولت دیکھنے والوں کے حوصلوں کو تقویت بخشتاہے۔اس کے بعد دہشت گردی کے خلاف حالیہ جنگ کی گیلری آتی ہے جہاں دہشت گردی کے عفریت کو جڑ سے اکھاڑنے کے دوران دی جانے والی پاک فوج کی قربانیاں دیکھنے والوں پر انتہائی گہرے اثرات مرتب کرتی ہے۔ یہ گیلری پاک فوج کے بہادر سپوتوں کی جرأت وبہادری کو جنگی نقشوں ، تصاویر اور گراف سے اُجاگر کرتی ہے۔ میوزیم کا برآمدہ منتخب پینٹنگز، پورٹریٹس، تصاویر ، مجسموں،نوادرات ، رجمنٹوں کے پرانے علم ونشان اور کمپیوٹر سکرینیں سیاحوں کی راہنمائی کرتے ہیں۔اسی طرح پتھر کے دور سے لے کر موجودہ دور تک ہتھیاروں کا ارتقاء ،پاک فوج کا قومی تعمیر وہنگامی حالات میں کرداراور اقوام متحدہ کے امن مشن جامع انداز میں پیش کئے گئے ہیں۔

pakarmymuseum1.jpg
بالائی منزل بھی سات گیلریوں پر مشتمل ہے جو کہ مختلف کورز، رجمنٹس اور قانون نافذ کرنے والے اداروں(پیراملٹری فورسز) کی تاریخ،پرچموں، ہتھیاروں، نوادرات ،شہداء کی تصاویر،اور نامور جنگی ہیروز کے بارے میں معلومات کے لئے کلی طور پر مختص کی گئی ہے۔اسی طرح بالائی منزل پر قائم آرکائیو یعنی تحقیقی کمرہ محققین کو درست عسکری تاریخ سے استفادہ حاصل کرنے کا موقع فراہم کرتا ہے۔
مختلف سطح کے وفود اور معززین پاک آرمی میوزیم راولپنڈی کے دورے پر آتے ہیں۔ ان میں بیرونی عسکری وفودو معززین، سفارت کا ر، مسلح افواج کے افراد اور ان کے اہل خانہ، فوجی و سرکاری اداروں کے وفود، سکولوں،کالجوںاوریونیورسٹیوں کے طلبائ، معلمین اور عوام الناس شامل ہیں۔


میوزیم منگل کے علاوہ ہفتے کے باقی تمام دن صبح 9 بجے سے شام 4 بجے تک کھلا رہتا ہے۔ پاک آرمی میوزیم لال کرتی سی ایس ڈی کے قریب واقع ہے۔ سیاح اپنی گاڑیاں سی ایس ڈی میں پارک کرتے ہیں جہاں قریب میں آرمی میوزیم کا داخلی دروازہ ہے۔ سویلین حضرات اپنا قومی شناختی کارڈ دکھانے کے بعد میوزیم کی سیر کرسکتے ہیں جبکہ آرمڈ فورسز سے منسلک تمام افراد اپنے سروس کارڈ دکھانے کے بعد میوزیم کی سیر کرسکتے ہیں۔ سکول، کالج اور یونیورسٹی کے طلباء و طالبات کے دورے کے لئے تعلیمی ادارے کا سربراہ اجازت نامے کا خط لکھتا ہے جس میں طلباء کی تعداد، دن اور وقت کا ذکر ہوتا ہے۔ میوزیم انتظامیہ خط میں مذکور دن اور وقت کے مطابق اجازت نامے سے متعلقہ ادارے کو آگاہ کردیتی ہے اور مقررہ تاریخ کو طلبہ کو گائیڈز کی مدد سے سیر کروائی جاتی ہے۔


اس کے علاوہ یہاں خاص طور پر متعددفنون لطیفہ کی نمائشوں ،انٹر سکول اور کالجوں کی پینٹنگ مقابلوں کاباقاعدگی سے اہتمام کیا جاتا ہے تاکہ طلباء میں تخلیق کے ساتھ ساتھ جذبہ حب الوطنی کو بھی بیدار کیا جا سکے۔
مجموعی طور پر یہ میوزیم ہر عمر کے افراد کے لئے قابل دید سیاحتی مقام ہے جو سیاحوں کو پاک فوج کے شاندار کارناموں و کردار پر روشنی ڈالنے کے ساتھ ساتھ پاک فوج کی عسکری تاریخ اور ورثے کو مختصر ،جامع اور درست انداز میں پیش کرتا ہے۔

 
Read 365 times

Leave a comment

Make sure you enter the (*) required information where indicated. HTML code is not allowed.

Follow Us On Twitter