لازوال قربانیاں

قومیں اپنی بقاء کے لئے سردھڑ کی بازی لگا دیتی ہیں۔ کسی قوم کی طاقت کا اندازہ اس بات سے لگایا جا سکتا ہے کہ اس کی نو جوان نسل اپنی سرزمین اور اپنے نظریے کے ساتھ کس طرح سے جڑی ہوئی ہے اور وہ اپنی سرحدوں کی حفاظت کے لئے کس قدر پرعزم ہے۔ الحمدﷲ پاکستانی قوم اور اس کے نوجوان اپنی دھرتی کی حفاظت اس سرشاری سے کرتے ہیں کہ اٹھارہ اٹھارہ، بائیس بائیس سال کے نوجوان اپنا آج قوم کے کل کے لئے قربان کرتے ہوئے ایک پل نہیں لگاتے۔ راجگال پوسٹ پر سرحد پار سے دہشت گردی کے حملے کے نتیجے میں اس پوسٹ کا کمانڈر بائیس سالہ لیفٹیننٹ ارسلان اپنی جان پر کھیل گیا لیکن اس نے پوسٹ پر لہراتے ہوئے سبز ہلالی پرچم پر کوئی آنچ نہ آنے دی۔نوعمر لیفٹیننٹ ارسلان شہیدتین بہنوں کا اکلوتا بھائی اور اپنے بوڑھے والدین کا واحد سہارا تھا لیکن دفاعِ وطن کی خاطر اس نے دشمن کا ڈٹ کر مقابلہ کرتے ہوئے جامِ شہادت نوش کیا۔ چیف آف آرمی سٹاف جنرل قمر جاوید باجوہ نے شہید لیفٹیننٹ ارسلان کے گھر جا کر والدین سے ملاقات کی اور قبر پر فاتحہ خوانی کی۔ اس موقع پر انہوںنے کہا کہ امن اور قانون کی حکمرانی کے لئے کسی قربانی سے دریغ نہیں کیا جائے گا۔ پاکستان کے لئے نوجوان قربانیاں دے رہے ہیں جبکہ کچھ لوگ پاکستان کے حوالے سے پروپیگنڈہ کرنے میں مصروف ہیں۔ انہوںنے کہا سمندر پار بیٹھ کر ملک توڑنے کی باتیں کرنے والے عنقریب قانون کی گرفت میں ہوں گے۔ انہوںنے کہا کہ جب تک ہمارے بہادر بیٹے موجود ہیں وطن پر کوئی آنچ نہیںآئے گی۔


دشمن پاکستان کی مسلح افواج اور قوم کی اس غیرت اور اَنا سے بخوبی واقف ہے جو وہ اپنی سرحدوں کے تقدس کی حفاظت کے لئے رکھتی ہیں۔ دہشت گردی کے خلاف گزشتہ پندرہ برس سے جاری جنگ میں افواج پاکستان اور پاکستانی قوم کی قربانیاں دنیا بھر کی اقوام سے زیادہ ہیں۔ یہ وہ مسلح افواج ہیں کہ جس کا سپہ سالار آج بھی سینہ تان کر دشمن کو باور کراتا ہے کہ تمہاری گولیاں ختم ہو جائیں گی لیکن ہمارے جوانوں کے سینے ختم نہیں ہوں گے۔ اس سے ہماری مسلح افواج کے دفاع وطن کے حوالے سے نہ صرف ایک عظیم تر نظریے کی عکاسی ہوتی ہے بلکہ وہ جذبہ بھی عود آتا ہے کہ جس کے تحت ہمارے سولجر اور افسر اس ملک پر جان وارنا اپنے لئے باعث صد وقار گردانتے ہیں۔یوں اُن شہیدوں اور غازیوں کے خون کا ایک ایک قطرہ خوشبو بن کر ملک کی فضائوں کو معطر کرتا ہے۔یہ افواج پاکستان کی قربانیوں ہی کا ثمر ہے کہ شمالی وزیرستان کا وہ علاقہ جو کبھی دہشت گردوں کا گڑھ تھا، وہیں آج پاکستانی قوم کرکٹ کا امن کپ 2017منعقد کروا کر بین الاقوامی سطح پر یہ پیغام دے رہی ہے کہ الحمدﷲ! ان علاقوں سے دہشت گردوں کا صفایا ہو چکا ہے اور مقامی عوام ایک پُرامن فضا میں سانس لے رہے ہیں۔
جذبے زندہ ہیں تو قوم زندہ ہے۔ بلاشبہ یہ قوم زندہ جذبوں والی قوم ہے کہ جس نے اس سرزمین کے حصول کے لئے بے پناہ قربانیاں دیں اور اس کے بعد اس مقدس سرزمین کے دفاع کو یقینی بنانے کے لئے مسلسل قربانیاں دیتی آ رہی ہے۔ دشمن جان لے! ایسی عظیم قوم اور اس کی بہادر افواج کو کبھی نہیں ہرایا جا سکتا۔ دنیا کے منظر پر ایسی ہی اقوام اپنی جگہ بناتی ہیں جو اپنے عظیم تر مقاصد سے نہ صرف واقف ہوں بلکہ ان کی تکمیل کے لئے بڑی سے بڑی قربانی دینے کا حوصلہ بھی رکھتی ہوں۔ وہ دن دور نہیں جب یہ قوم شدت پسندی سمیت دیگر تمام چیلنجز پر مکمل طور پرقابو پانے میں کامیاب ہو جائے گی۔ انشاء اﷲ!
افواج پاکستان زندہ باد
پاکستان پائندہ باد

Read 185 times

Leave a comment

Make sure you enter the (*) required information where indicated. HTML code is not allowed.

Follow Us On Twitter