نَصْرُٗ مِّنَ اﷲِ وَ فَتْحُ ٗ قَرِیْبُ

Published in Hilal Urdu May 2017

قومیں پرعزم ہوں اور اپنے نظریے کے ساتھ مضبوطی سے جڑی ہوئی ہوں تو وہ ضرور کامیابی سے ہمکنار ہوتی ہیں۔ گزشتہ ایک دہائی سے زائد عرصہ سے دہشت گردی کے عفریت کے خلاف نبردآزما قوم ایک طویل اور کٹھن جنگ میں کافی حد تک کامیابیاں سمیٹنے کے بعد اب الحمدﷲ اس مقام پر ہے کہ ملک سے دہشت گردی کے نیٹ ورک کا عمومی طور پر خاتمہ ہو چکا ہے اور اب وہ فساد بپا کرنے والوں اور ان کے سہولت کاروں کے خلاف ملک بھر میں آپریشن ردالفساد کا آغاز کر چکی ہے۔


بلاشبہ آپریشن ردالفساد انتہائی موثر انداز سے جاری ہے اور آئے روز ملک کے مختلف علاقوں سے فسادیوں اور ان کے سہولت کاروں کو تلاش کر کے اُنہیں ٹھکانے لگایا جارہا ہے۔ چیف آف آرمی سٹاف جنرل قمر جاوید باجوہ کا کہنا ہے کہ قوم کا ہر فرد ردالفساد کا سپاہی ہے۔ گویا ہر پاکستانی شہری چاہے وہ کسی بھی طور سے ملک کی خدمت کر رہا ہے اسے آپریشن ردالفساد میں ریاست کا ہاتھ بٹانا ہے اور اس پاک سرزمین کو صحیح معنوں میں فساد اور شدت پسندی سے پاک کرنا ہے اور اسے ایسی سرزمین بنانا ہے جس کے باشندے ملکی قانون اور اپنے اپنے مذہبی عقیدے کے مطابق زندگی بسر کرنے کا حق رکھتے ہوں۔ یہ تبھی ممکن ہے جب قوم افواج اور دیگر ادارے پوری دلجمعی سے آپریشن ردالفساد کو کامیاب بنانے میں کوئی کسر اٹھا نہ رکھیں۔ قوم اور افواج پاکستان کی کامیابیوں کو دیکھتے ہوئے پاکستان دشمن عناصر کبھی مردم شماری میں مصروف ٹیموں کو اپنا نشانہ بناتے ہیں توکبھی کوئی دوسرا سافٹ ٹارگٹ تلاش کر کے اپنی ’’دہشت‘‘ بٹھانے کی ناکام

 

کوشش کرتے ہیں۔ قوم بھاگتے ہوئے فسادیوں کا ان کی کمین گاہوں تک پیچھا کر کے ان کا خاتمہ کرنے کا عزم کئے ہوئے ہے۔ اب اس دھرتی اور سرزمین پر ان فسادیوں کے لئے کوئی جگہ نہیں ہے۔ ان کا خاتمہ ان کا مقدر بن چکا ہے۔
ڈائریکٹر جنرل آئی ایس پی آر میجر جنرل آصف غفور آپریشن ردالفساد کے حوالے سے واضح طور پر قوم کو آگاہ کر چکے ہیں کہ ردالفساد درحقیقت پہلے کئے گئے آپریشنز کے حاصل کردہ اہداف کو یکجا
(Consolidate)
کرنا ہے اور یہ صرف فوج کا آپریشن نہیں اس میں پولیس، رینجرز اور دیگر ادارے بھی کام کر رہے ہیں۔ لہٰذا یہ جنگ صرف افواج پاکستان نے تنہا نہیں پوری قوم نے مل کر جیتنی ہے۔ اور ہر ادارے نے کام کرنا ہے۔ ڈی جی آئی ایس پی آر کے خیالات اس امر کی عکاسی کرتے ہیں کہ جب پوری قوم اور تمام ادارے پوری یکسوئی کے ساتھ کسی چیلنج سے نمٹنے کے لئے برسرپیکار ہوں تو کوئی وجہ نہیں کہ ریاست کسی بھی عفریت کا قلع قمع کرنے میں کامیاب نہ ہو سکے۔ الحمد ﷲہماری قوم مکمل کامیابی کے حصول کے بہت قریب پہنچ چکی ہے۔ اب ضرورت ہے کہ قوم کا ہر ایک فرد ملک دشمنوں کی سرکوبی کے لئے پرعزم رہے اور اس سلسلے میں متعلقہ اداروں کی معاونت ایک قومی فریضہ سمجھ کر کرے تاکہ اس مقدس دھرتی سے شدت پسندی اور فساد کی بیخ کنی ہمیشہ ہمیشہ کے لئے کی جا سکے۔

Read 385 times

Leave a comment

Make sure you enter the (*) required information where indicated. HTML code is not allowed.

Follow Us On Twitter