مارچ 2018
شمارہ:03 جلد :55
تحریر: یوسف عالمگیرین
قوم رواں برس اٹھترواں یومِ پاکستان منا رہی ہے۔ کسے معلوم تھا کہ منٹو پارک لاہور میں23 مارچ1940 میں منظور کی جانے والی ' قرار داد پاکستان' کے خواب کو فقط سات برس کی قلیل مدت میں تعبیر مل جائے گی۔ گویا یہ وہ قوم ہے جس نے قائدِاعظم محمدعلی جناح کی بے مثال قیادت میں شبانہ روز محنت کرتے ہوئے پاکستان کی صورت میں ایک آزاد مسلم ریاست کا حصول یقینی بنایا۔1947 میں وطنِ عزیز کے قیام سے....Read full article
 
تحریر: سمیع اللہ خان
پاک امریکہ تعلقات کی کڑیاں قیامِ پاکستان سے شروع ہوکر، سیٹو ، سینٹو معاہدوں پر امریکہ کی بے وفائی سے ہوتی ہوئی2017میں نازک موڑ پر آگئیں۔ اس سے قبل بی بی سی نے سال 2011 کو پاک امریکہ تعلقات کے لئے
disastrous year
کہا لیکن ہمارے تئیں سترہ کا اختتام اور 2018کا آغاز ان ستربرسوںمیں سب سے زیادہ نازک رہا۔دیکھنے کو تو یہ ''یوٹرن''ہی لگتاہے لیکن اس کی کڑیاں....Read full article
 
 alt=
تحریر: خرم عباس
کیا پاکستان کا تصورعالمی سطح پر بھی اتنا ہی بُرا ہے جتناپاکستان کے اندر سمجھا جاتا ہے؟اس کا جواب یقینا نفی میں ہے۔دراصل اس وقت پاکستان کے متعلق جو منفی موادبھارت اور مغرب، دنیا کے سامنے پیش کر رہے ہیں، بدقسمتی سے پاکستانی عوام بھی ملک کو اسی تناظرمیں دیکھ رہے ہیں۔اس کے ساتھ ساتھ ہمارااپنامنفی رویہ بھی ہماری نوجوان نسل، دانشور اور عام طبقے کے لوگوں میںاس مفروضے کومزیدفروغ....Read full article
 
تحریر: پروفیسر فتح محمد ملک
اقبال نے یہ خواب دیکھا تھا کہ اسلامیانِ ہند کی مجوزہ آزاد اور خود مختار مملکت میں اسلام کو عرب شہنشاہیت کی زنجیروں سے آزاد کردیا جائے گا، دُنیائے اسلام کا انجماد ٹوٹے گا اور یوںاسلام کی حرکی اور انقلابی روح بیدار اور سرگرمِ کار ہو سکے گی۔ ہم نے گزشتہ نصف صدی کے دوران عرب ملوکیت کی چھاپ سے اسلام کو پاک کرنے کے بجائے اس چھاپ کو اور زیادہ گہرا کر دیا ہے۔ نتیجہ یہ کہ نہ تو ہم ....Read full article
 
تحریر: ڈاکٹر صفدر محمود
میں ان مغربی مؤرخین سے متفق نہیں ہوں جو محض اس وجہ سے ظہورِ پاکستان کو ایک فوری واقعہ قرار دیتے ہیں کہ پاکستان مختصر سے عرصے میںوجود میں آ گیا۔ تاریخ اس امر کی شاہد ہے کہ پاکستان کا ظہور مسلمان عوام اور مسلمان رہنمائوں کی طویل جدوجہد کا نتیجہ تھا۔ دراصل یہ کئی عشروں پر محیط عمل کا نقطہ عروج تھا۔ صدیوں تک ہندوئوں کے ساتھ پُرامن بقائے باہمی کے باوجود ہندی مسلمان ہمیشہ.....Read full article
 
تحریر: پرویوش چوہدری ، ڈاکٹر شاہد محمود
مصنوعی ذہانت سے پیدا ہونے والی مشکلات سے بنٹنے اور مواقعے سے فائدہ اٹھانے کے لئے حکومتوں کو سبک رفتاری سے منصوبہ بندی کرنی ہو گی۔ مصنوعی ذہانت کے میدان میں حیران کر دینے والی ترقی جاری ہے۔ ....Read full article
 
تحریر: ازکیٰ کاظمی
خدا جہاں اولاد دے کر ماں باپ کو نوازتا ہے وہیں وہ اولاد کے ذریعے والدین کا امتحان بھی لیتا ہے۔ کہتے ہیں جو چیز یا رشتہ آپ کو کمزور کر دے بالآخر وہی آپ کی طاقت بن جاتا ہے۔ اولاد کی آزمائش اس دنیا کاسخت ترین امتحان ہے لیکن اگر وہی اولاد والدین کی سرفرازی کا باعث بنے تو مرتے دم تک والدین کا سر فخر سے بلند رہتا ہے۔ ایسا ہی ایک جواںمرد اور پاک باز بیٹا پاکستان ملٹری اکیڈمی کاکول سے.....Read full article
 
تحریر: محمد طیب انصاری
کثیرالثقافتی معاشروں
(Multicultural societies)
کے اندر کئی ثقافتی عناصر موجود ہوتے ہیں۔ جو کبھی معاشروں میں ٹکرائو ، کبھی تنوع اور کبھی ہم آہنگی کا باعث بنتے ہیں۔ جن سے لوکل ثقافت میں نئی نئی جہتیں پیدا ہوتی ہیں، نئے نئے رجحانات جنم لیتے ہیں۔ کچھ فرسودہ روایات کا خاتمہ کیا جاتا ہے اور ماڈرن خیالات اور نئی روایات ان کی جگہ لے لیتے ہیں۔ ایسے معاشروں میں لوگ اپنے....Read full article
 
تحریر: ڈاکٹر رشید احمدخان
اگر یہ جاننا مقصود ہو کہ ملک کاجغرافیائی محلِ وقوع، اس کی اندرونی سیاست اور خارجہ تعلقات پر کس طرح اثر انداز ہوتا ہے تو بحرِ ہند کے عین وسط میں واقع مالدیپ کو ایک تازہ مثال کے طور پر پیش کیا جاسکتا ہے۔ ایک ہزار سے زائد چھوٹے بڑے جزائر پر مشتمل آبادی (پانچ لاکھ سے کم) اور رقبہ( تقریباً تین سو مربع کلو میٹر) کے لحاظ سے مالدیپ اگرچہ ایشیا کا سب سے چھوٹا ملک ہے....Read full article
 
تحریر: پروفیسر ڈاکٹر منور ہاشمی
انسانی زندگی کی تقویمِ ماہ وسال میں بعض ایام ایسے بھی ہوتے ہیں جن میں طلوع ہونے والا سورج زمانی و مکانی تاریکیوں کو دور کرنے کے ساتھ انسانی بخت کے اندھیروں کو بھی اجالوں میں تبدیل کر دیتا ہے۔1940ء کا 23 مارچ بھی ایسے ہی دنوں میں شامل ہے۔اس دن کا سورج بظاہر شام کو غروب ہو گیا مگر ملت اسلامیہ کو ایک صبحِ مسلسل عطا کر گیا،جو آزادی کی صبح تھی جو آج بھی قائم ہے اور ....Read full article
 
تحریر: فاروق اعظم
پاکستان کو قائم ہوئے 70برس بیت چکے، لیکن عمومی حلقوں میں یہ سوال اپنی جگہ اب بھی برقرار ہے کہ کیا واقعی ہندوستان کی تقسیم ناگزیر تھی؟ اگرچہ سوال ایک جملے پر مشتمل ہے، تاہم اس کا جواب مفصل بحث کا متقاضی ہے۔ تقسیمِ ہند کا مطالبہ 1940ء کی قراردادِ پاکستان کے موقع پر یکایک سامنے نہیں آیا تھا، بلکہ یہ آرزو کئی دہائیوں پر محیط اور متعدد پہلوئوں کو اپنے اندر سمیٹے ہوئے تھی۔ ہندوستان کی تقسیم .....Read full article
 
تحریر: سید بہادر علی سالک
بابائے قوم کی سالگرہ، برسی، یومِ پاکستان اور یومِ آزادی پوری قوم ستر سالوں سے روایتی جوش وجذبے سے مناتی آرہی ہے اور اُن کے کارناموں کا ذکربھی روایتی انداز میں کیا جاتا رہا ہے لیکن افسوس کے ساتھ کہنا پڑتا ہے کہ ہم نے عملی طور پر اُن کی تعلیمات اُن کے دئیے ہوئے زریں اُصول، ایمان، اتحاد اور تنظیم کو پس پشت ڈال دیا ہے۔یہ بھی ایک حقیقت ہے کہ نوجوان نسل برصغیر کے کروڑوں مسلمانوں کی .....Read full article
 
تحریر: شفق بھٹی
دورِ جدید میں بڑھتے ہوئے پیچیدہ مسائل کے حل کے لئے ٹیکنالوجی کو جدید سے جدیدتر بنایا جا رہا ہے۔ اسی ٹیکنالوجی کی دوڑ میں آرٹی فیشل انٹیلی جینس یعنی مصنوعی ذہانت نے انتہائی سنجیدہ موڑ لے لیا ہے۔ اگرچہ آرٹیفیشل انٹیلی جینس اپنے ابتدائی دور سے گزر رہی ہے لیکن مستقبل میں بہت سے ایسے ناقابل یقین تکنیکی منصوبوں کا دعویٰ کیا جا رہا ہے جو کہ تمام نوع بشر کو ایک نہایت حیرت انگیز دور .....Read full article
 
تحریر: محسن شاہد
مغربی ممالک کے اندر اٹھنے والے سیاسی نظریات، جن کو ہم
Populism
کہتے ہیں، نے ریاستی وجود پہ بڑے جامع سوالات اٹھادیئے ہیں۔ اقوامِ عالم میں موجودہ ریاستی تعریف عین مغربی نوعیت کی ہے اور عام عوام یا پھر
Political Science
کے طالب علم ریاست کے وجود اور شناخت کو بھی اُس مغربی علم کی بنیاد پر پرکھتے ہیں....Read full article

تحریر: ڈاکٹرحمیرا شہباز
''پاکستان انڈیا کا میچ تھا۔ آپ کو پتہ ہے یہ کرکٹ میچ جنگ سے کم نہیں ہوتا اور ہم جنگ جیت گئے۔ میں خوشی کے مارے گھر کی چھت پر چڑھ گیا۔ گھر کی خواتین خالہ کے ہاں میلاد پرگئی ہوئی تھیں۔ اسی وقت ہمارے کوئی عزیز جو بہت سالوں سے ہم سے ناراض تھے، ہمارے گھر آئے۔ انہوںنے مجھے چھت سے اُترآنے کو کہا لیکن میں نے ذرا دیر لگائی۔ پھر انہوںنے کہا 'اوئے نیچے آ، جیلانی شہید ہوگیا ہے۔ ........Read full article
 
تحریر: سیدہ شاہدہ شاہ
جہلم سے راولپنڈی، اسلام آباد بذریعہ جی ٹی روڈ جائیں تو دینہ، پھر ڈومیلی آتا ہے۔ اس سے چند کلو میٹر کے فاصلے پر سوہاوہ کا وہ شہر آتا ہے جہاں محلہ نئی آبادی ڈھیری وارڈ نمبر5 کے قبرستان میں 19 پنجاب رجمنٹ کا وہ مایہ ناز اور بہادر سپوت شہادت کا جام پیئے ، سبز ہلالی پرچم کا کفن اوڑھے ایک قبر میں ابدی نیند سو رہا ہے جسے آرمی والے اور اس کے گائوں والے نائیک طالب حسین کے نام سے جانتے ہیں۔.....Read full article
 
تحریر: ڈاکٹر وقار احمد
کرئہ ارض پر پانی کی کل مقدار چودہ لاکھ 3 کے ایم ہے، جو کہ ایک بہت بڑی مقدار ہے، تاہم پانی کے اس عظیم ذخیرے کا 97.6 فیصد سمندر کی شکل میںہے، جو کہ ناقابل استعمال ہے۔ جبکہ صرف.....Read full article
 
تحریر : ڈاکٹر صدف اکبر
فاسٹ فوڈ ایک ایسا تیار کھانا ہوتا ہے جو ہوٹلوں اور ریسٹورنٹ وغیرہ میں بہت جلدی تیار شدہ حالت میں پیش کیا جا سکے ۔ دیگر کھانوں کے مقابلے میںیہ خوراک عام طور پر کم غذائیت کی حامل مگر مہنگی ہوتی ہے۔ آج کل لوگوں ، بالخصوص نوجوان طبقے اور بچوں، میں فاسٹ فوڈ کھانے کا رجحان خطرناک حد تک بڑھتا.....Read full article
 
تحریر: جبار مرزا
جناب الطاف حسن قریشی صاحب کی زیرِ نظر کتاب '' جنگ ستمبر کی یادیں'' ہماری افواج کا عظیم جذبۂ جہاد، فوج اور عوام میں اعتماد کے گہرے رشتے اور ناقابلِ فراموش واقعات پر محیط ہے۔ شاہینوںکے شہر سرگودھا سے دوارکا تک اور راجستھان سے معرکہ کھیم کرن تک دفاعِ وطن کے ایمان افروز لمحات کو جس خوبصورتی سے انہوںنے ہمارے لئے فردوسِ نظر کا سامان کیا، وہ لائقِ تحسین ہے۔ جنگ جذبوں سے لڑی .....Read full article
 
تحریر: انوار ایوب راجہ
میرے سامنے برطانوی ہند کی فوج کے ان اسیر سپاہیوں کے متعدد خطوط موجود ہیں کہ جنہوں نے بعد میں آزادی پاکستان کی جنگ لڑی اور ان میں سے بیشتر کا تعلق آزاد کشمیر سے تھا۔مجھے یاد ہے کارگل کی جنگ کے دنوں میں جب سرحد سے پرچم میں لپٹے عظیم بیٹے اپنی ماں کو غموں میں نڈھال چھوڑے مادرِ وطن پر قربان ہو کر واپس اپنے اپنے آبائی گھروں کو لوٹ رہے تھے تو .....Read full article
 
تحریر: خدیجہ محمود
کی کوریج کے دوران ہوا جہاں افواج پاکستان کے سپوت مختلف وردیوں میں گھوم رہے تھے۔ وہیں خاکی وردی میں سبز پگڑی باندھے ایک سردار سینے پر سبز ہلالی پرچم سجائے ساری دنیا کے سامنے فخر سے پاک فوج کی ترجمانی کر رہا تھا۔ جی یہ کیپٹن ہرچرن سنگھ تھا۔ چہرے پر دلیری اور بے خوفی، آنکھوں میں للکار اور پہلی ملاقات میں ہی ان کی کہی ہوئی یہ بات مجھے آج بھی یاد ہے کہ ''بہن! ہر ادارے.....Read full article
 
تحریر: محمد کامران خان
زبان و ادب کی بہت سی ایسی مثالیں ہیں جنہیں ہم روز مرہ زندگی کی عمومی گفتگو میں استعمال کرتے رہتے ہیں۔یہ ادبی کہاوتیں، کردار، مونو لاگ، ڈائیلاگ، تشبیہات، استعارے اور حوالے انسانی بیان کو نہ صرف رنگین بناتے ہیں بلکہ لفظوں میں چھپے معنی و پیغام کو مزید مؤثر انداز میں سننے والے تک پہنچانے کا ذریعہ بنتے ہیں۔لیکن دور جدید میں زبان و ادب سے ہٹ کر کچھ ایسی اصطلاحات بھی عام ہو گئی ہیں....Read full article
Last modified on Tuesday, 10 April 2018 05:00

Leave a comment

Make sure you enter the (*) required information where indicated. HTML code is not allowed.

Follow Us On Twitter