ستمبر 2017
شمارہ:9 جلد :54
تحریر: یوسف عالمگیرین
قوم رواں برس یومِ دفاع اُسی جوش و خروش سے منا رہی ہے جس کے ساتھ اس نے باون سال قبل عددی اعتبار سے ایک بڑے دشمن کو شکستِ فاش دی تھی۔ ستمبر 65ء کی جنگ کے بعد ہی سے دشمن کو اس امر کا ادراک ہوا کہ وہ اس بہادر قوم اور اس کی جری افواج کو روائتی انداز سے کبھی شکست سے دوچار نہیں کر سکتا۔ تب ہی سے دشمن نے اس عظیم مملکتِ خداداد کے خلاف سازشوں کے جال بُننا شروع کر دیئے۔ سانحۂ مشرقی پاکستان اُنہی سازشوں کا شاخسانہ تھا۔ دشمن ....Read full article
 
تحریر: فاروق اعظم
1965ء کی جنگ کو نصف صدی بیت چکی، تاہم پاکستان اور بھارت کے درمیان لڑی جانے والی اُس پہلی باقاعدہ جنگ پر بحث و تمحیص کا دروازہ اب بھی بند نہیں ہوا۔ پچاس سال کا عرصہ کسی ملک یا قوم کے لئے کم نہیں ہوتا۔ کامیاب وہ ہیں جو ماضی سے سیکھیں، حال کو سنواریں اور مستقبل کو روشن تر کریں۔ 65ء کے بعد یہ 52واں ماہِ ستمبر ہے، اس کے باوجود ہندوستانیوں نے یہ بحث شروع کردی ہے کہ جنگ 65ء میں ....Read full article
 
 alt=
تحریر: جاوید حفیظ
امریکی صدر ڈونلڈٹرمپ نے فورٹ مائر ورجینیا میں افغانستان اور جنوبی ایشیا کے بارے میں اہم پالیسی بیان دیا ہے۔ بیان کا ایک حصہ پاکستان کے لئے مختص ہے۔ بیان میں افغانستان کے لئے آئندہ عسکری پالیسی کے خدوخال بیان کئے گئے ہیں اور شاید اسی وجہ سے امریکی صدر نے اپنی تقریر کے لئے ملٹری بیس کا انتخاب کیا۔ صدر ٹرمپ افغانستان سے امریکی فوج کے مکمل انخلاء کے حامی رہے ہیں۔ یہ امریکی تاریخ کی طویل ترین جنگ ہے۔ امریکی عوام اس جنگ ....Read full article
 
تحریر: ڈاکٹر رشید احمد خاں
کستان کے دفا ع اور ترقی کے لئے ایک طاقت ور بحریہ کی ضرورت جس شخصیت نے سب سے پہلے محسوس کی وہ بانئ پاکستان قائد اعظم محمد علی جناح تھے۔ اس وقت پاکستان دو حصوں مشرقی اور مغربی پاکستان پر مشتمل تھا۔ یہ دونوں حصے اپنی جغرافیائی وقو ع پذیری کی وجہ سے بالترتیب خلیج بنگال اور بحیرہ عرب میں بحری سر گرمیوں پر نظر رکھنے کی پوزیشن میں تھے۔ دفاعی حکمتِ عملی اور تجارتی سر گرمیوں کے حوالے سے خلیج بنگال او ربحیرہ عرب....Read full article
 
تحریر: ڈاکٹر صفدرمحمود
کبھی غور کیا آپ نے کہ انسان محض گوشت پوست اور ہڈیوں کا نام نہیں، بلکہ ’انسان‘ جذبے کا نام ہے ۔ انسانی زندگی کا سب سے بڑا راز انسانی جذبہ ہے۔ بقول مولانا رومی تم جو ہو وہ تمہاری سوچ ہے باقی سب گوشت پوست ہے۔ مطلب یہ کہ انسان کو اس کی سوچ، عمل اورجذبے سے محروم کردیا جائے تو باقی صرف گوشت اور ہڈیا ں بچتی ہیں۔ یہ جذبہ ہی ہے جو انسان کو محافظِ ملک و قوم بناتا اورجہاد کی منزل کی جانب لے جاتا ہے۔ یہ جذبہ ہی ہے.....Read full article
 
تحریر: الطاف حسن قریشی
کیا خوب تھے وہ دن جن کی یادیں آج بھی دلوں کو نئے جذبوں اور ولولوں سے سرشار کر دیتی ہیں۔
یہ باون برس پہلے کی بات ہے، میں اپنے دوستوں کی دعوت پر 5 ستمبر 1965ء کی سہ پہر ساہیوال روانہ ہوا۔ اِرادہ ایک دو روز ٹھہرنے کا تھا۔ ایک ہی دن پہلے میں مقبوضہ کشمیر میں واقع چھمب جوڑیاں کے محاذ سے لوٹا تھا جہاں پاکستان کی فوجیں اکھنور کی طرف پیش قدمی کر رہی تھیں۔....Read full article
 
تحریر: سینیٹر(ر) محمد اکرم ذکی
پاکستان اور بھارت کے مابین ستمبر 1965 کی جنگ تاریخ کے صفحات میں رقم ہوکر آئندہ نسلوں کے لئے ایک ناقابلِ تردید گواہی ہے کہ جنگوں میں فتح گولہ بارود، عددی برتری یا عسکری قوت کی مرہونِ منت نہیں ہوتی بلکہ دشمن کو فنا کرنے کا عزم، مادرِوطن کے دفاع پہ مرمٹنے کا حوصلہ، موت پر موت بن کر ٹوٹنے کا جذبہ جنگوں میں فتح یا شکست کا فیصلہ کرتے ہیں، اور انہی جذبوں سے سرشار پاک فوج کے نڈر، بہادر اور جری جوانوں نے اس جنگ میں اپنے سے.....Read full article
 
تحریر: وثیق شیخ
جنگ ستمبر1965کے دوران جرأت و بہادری کے ایسے ایسے واقعات دیکھنے اور سننے کو ملے کہ ان پر انسانی عقل حیران ہے۔ سیالکوٹ کے قریب چونڈہ کے محاذ پر دشمن نے 400 سے زائد ٹینکوں سے حملہ کیا۔ دوسری جنگ عظیم کے بعد دنیا میں کسی بھی جگہ ٹینکوں سے لڑی جانے والی یہ سب سے بڑی جنگ تھی۔ قلیل تعداد اور اسلحہ کم ہونے کے باوجود پاک فوج کے بہادر اس جاں نثاری سے لڑے کہ دنیا کی عسکری تاریخ....Read full article
 
تحریر: لیفٹیننٹ کرنل ضیاء شہزاد
گئے وقتوں میں پشاور کے آرٹلری میس میں ہمہ وقت پندرہ سے بیس بیچلر آفیسرز کا ڈیرہ رہا کرتا تھا۔ ایک کمرے میں عموماً تین سے چار افسروں کا پڑاؤ ہوتا تھا۔ ایک غیر تحریری معاہدے کی رو سے میس میں موجود ہر شے عوام کی مشترکہ ملکیت تصور کی جاتی تھی۔ ذاتی سامان کی پھبتی صرف نیکر بنیان تک ہی محدود تھی بلکہ اکثر صورتوں میں توانہیں بھی روم میٹس....Read full article
 
تحریر: جبار مرزا
>ستمبر1965 کی جنگ کراماتی اور کرشماتی جنگ تھی۔
خاکی وردی والے خاک و خون ہو کر شہادت سے سرفراز ہوگئے مگر وطنِ عزیز کی سالمیت پر آنچ نہ آنے دی۔
چونڈہ میں دنیا کی دوسری بڑی ٹینکوں کی لڑائی لڑی گئی، 5ستمبر 1965 کی آدھی رات کے وقت بھارتی فوج بین الاقوامی سرحد پر آکر رُک تو گئی تھی مگر اُس کے ڈویژنل افسروں نے اپنے ماتحتوں پر انکشاف....Read full article
 
سروے : ازکٰی کاظمی
1965 کی جنگ نہ صرف ہمارے بزرگوں بلکہ ہماری نوجوان نسل کے دلوں پر آج بھی پاک فوج کی محبت اور جانثاری کا نقش قائم کئے ہوئے ہے۔ 6ستمبر 1965کی جنگ کے حوالے سے نوجوان نسل کے تاثرات جاننے کے لئے ہم نے ایک سروے کیا اور مختلف شعبوں سے تعلق رکھنے والے نوجوانوں کے خیالات جانے جو ہلال کے قارئین کے لئے شائع کر رہے.....Read full article
 
تحریر:لیفٹیننٹ عاصمہ
ایک جانب آگ کے پھیلتے اور بلند ہوتے شعلے تھے تو دوسری طرف گولیوں کی بوچھاڑ،اسلحے بارود کی بو اور آگ کا دھواں کسی کے بھی حواس گم کرنے کے لئے کافی تھے لیکن جاوید احمدکے لئے ان میں سے کچھ بھی اہم نہ تھا،یہ سب چیزیں ان کی راہ نہیں روک سکتی تھیں۔۔۔آگ کے شعلوں سے تو ان کا 26 برس پرانا تعلق تھا اور بارود کی بو انہیں صرف یہ یاد دلاتی تھی کہ بزدل دشمن نے رات کی تاریکی میں نہ صرف ان کے عزیز وطن کی حرمت کو للکارا ہے.....Read full article
 
تحریر: غزالہ یاسمین
6 ستمبرہماری قومی تاریخ کا وہ روشن باب ہے جس میں افواج پاکستان اور قوم کی جرات و بہادری کی ایسی داستانیں رقم ہیں جن سے آج بھی ہم اپنے ولولوں اور جذبوں کو روح تازہ بخشتے ہیں۔ یقیناًاس روزہم نے ثابت کردیا کہ پاکستان کوئی ترنوالہ نہیں اورقوم اپنی آزادی اور خودمختاری کا تحفظ کرنا جانتی ہے۔ ہرسال انہی ولولوں کی روشنی میں دفاع وطن کا اعادہ کرتی ہے۔ اس سال پوری.....Read full article
 
تحریر: عفت حسن رضوی
یہ 19جولائی تھی،خیبرایجنسی کی راجگال وادی میں فجر کی سپیدی نمودار ہونے کو تھی، سپاہی ایک مشکل معرکے کے لئے تیار تھے، نماز فجر پڑھی گئی،سب ہی نے آپریشن میں کامیابی کی دعا مانگی، مگر ایک نوجوان نے ہاتھ بلند کئے اور آنکھیں موندے اپنے رب سے کامیابی کے ساتھ شہادت مانگنے لگا۔ یہ سپیشل سروسز گروپ، سیون کمانڈو بٹالین (ببرم )کا کمانڈو....Read full article

تحریر: ڈاکٹر ہما میر
قیامِ پاکستان کو پورے ستّر سال ہوگئے، الحمدﷲ اس طویل عرصے میں مادرِ وطن نے مشکلات کے باجود ترقی کا سفر جاری رکھا۔ ان 70 برسوں میں پاکستان کو کئی چیلنجز کا سامنا کرنا پڑا، کئی جنگیں ہم پر مسلط کی گئیں، مگر بفضلِ خدا ہم ہر مصیبت سے نہایت ہمت سے نبرد آزما ہوئے، پوری قوم آزمائش کی ہرگھڑی میں متحد ہو کر امتحان........Read full article
 
تحریر: یاسر پیرزادہ
اس نے بس میں بیٹھے ہوئے مسافروں پر ایک اچٹتی سی نگاہ ڈالی، ہر چہرہ سپاٹ اور جذبات سے عاری تھا، کچھ لوگ کھڑے تھے، بیٹھے ہوئے مسافروں کی نسبت ان کے چہروں پر بیزاری زیادہ نمایاں تھی۔’’جانور کہیں کے‘‘ اس نے دل میں کہا اور بیٹھنے کے لئے جگہ تلاش کرنے لگا مگر کوئی سیٹ خالی نہیں تھی، مایوس ہو کر اس نے اپنے ساتھ....Read full article
 
تحریر: حفصہ ریحان
گزشتہ قسط کا خلاصہ
مجاہدانیس سالہ لڑکا ہے جو ایک مدرسے کاطالب علم ہے ۔ وہ کچھ پریشان ہے اور مدرسے کے میدان کے ایک کونے میں پتھرپربیٹھا ہواہے۔حیدر جو اُس کے ساتھ پڑھتا ہے، آکراس کے پاس بیٹھ جاتاہے اوراس سے پریشانی کاسبب پوچھتاہے اور اس کے گھروالوں کا حال احوال بھی دریافت کرتاہے۔لیکن اس کے جوابات دینے میں مجاہد بے حد گھبرا....Read full article
Read 199 times

Leave a comment

Make sure you enter the (*) required information where indicated. HTML code is not allowed.

Follow Us On Twitter