کینیڈا میں پاکستان زندہ باد

تحریر: ڈاکٹر ہما میر

kanadammainpakfesty.jpgقیامِ پاکستان کو پورے ستّر سال ہوگئے، الحمدﷲ اس طویل عرصے میں مادرِ وطن نے مشکلات کے باجود ترقی کا سفر جاری رکھا۔ ان 70 برسوں میں پاکستان کو کئی چیلنجز کا سامنا کرنا پڑا، کئی جنگیں ہم پر مسلط کی گئیں، مگر بفضلِ خدا ہم ہر مصیبت سے نہایت ہمت سے نبرد آزما ہوئے، پوری قوم آزمائش کی ہرگھڑی میں متحد ہو کر امتحان میں کامران ہوئی۔ افواجِ پاکستان کی بے مثال قربانیوں اور محبِ وطن پاکستانیوں کی قابلِ قدر کاوشوں سے وطنِ عزیز اب ترقی و کامرانی کی ایسی راہ پر گامزن ہے کہ ان شاء اﷲ آنے والے برسوں میں پاکستان کا شمار ترقی پذیر کے بجائے ترقی یافتہ ممالک میں ہوگا۔
وطن سے محبت یوں تو ہر پاکستانی کے دل میں ہوتی ہے مگر وہ پاکستانی جو دیارِ غیر میں ہوں ، جو مادرِ وطن سے دور ہوں، اُن کو اپنے ملک کی یاد زیادہ آتی ہے، خاص طورپر قومی نوعیت کے حامل اہم تہواروں ۔۔۔پر، یومِ پاکستان پر، یومِ آزادی پر اور یومِ دفاع پر۔ پاکستان کی محبت دل میں یوں موجزن ہوتی ہے کہ بس بیان سے باہرہے ۔


ان ایام میں پاکستان میں تو سبھی خوشیاں منا رہے ہوتے ہیں مگر ملک سے باہر رہنے والوں کو شدت سے اپنے پاکستانی ہونے، وطن سے محبت ہونے اور وطن سے دور ہونے کا احساس ہوتا ہے۔
ہر سال کی طرح امسال بھی 14اگست یعنی یومِ آزادی پاکستان ونکوورمیں نہایت جوش و خروش سے منایا گیا۔ اس حوالے سے کئی تقریبات ہوئیں جن میں سرفہرست پاکستان فیسٹول اور ونکوور میں پاکستان کے قونصل جنرل محمدطارق کی رہائش گاہ پر ہونے والی پرچم کشائی کی تقریب تھی۔اس روز موسم اچھا تھا، دھوپ نکلی ہوئی تھی۔ ویسے کینیڈا میں یہ بات بھی خوب ہے کہ جب دھوپ نکلی ہو تو کہتے ہیں موسم اچھا ہے جبکہ اس کے برعکس پاکستان میں بادل چھائے ہوں، یعنی مطلع ابرآلودہو، تو کہتے ہیں موسم اچھا ہے۔ ہم اپنے ٹی وی شو ’دل اپنا پاکستان‘ کی ٹیم کے ہمراہ وقتِ مقررہ سے پہلے ہی پہنچ گئے تھے۔ دراصل تقریب کا دورانیہ کم ہوتا ہے لہٰذا اکثر لوگ وقت سے پہلے پہنچتے ہیں۔ تقریب کا آغاز تلاوتِ کلامِ پاک سے ہوا جس کے بعد صدرِ پاکستان اور وزیرِاعظم پاکستان کے پیغامات پڑھ کر سنائے گئے۔ یہ پیغامات انگریزی میں تھے اور تقریب کی کارروائی بھی گزشتہ سال کی طرح انگریزی میں ہی ہوئی۔ پیغامات کے بعد قونصل جنرل کی تقریر ہوئی اور کینیڈا میں پاکستان سے تعلق رکھنے والی سینیٹر سلمیٰ جان نے بھی خطاب کیا۔ اس کے بعد پاکستان کا قومی ترانہ بجایا گیا جس کے دوران پرچم کشائی ہوئی ۔ اس موقع پر کیک بھی کاٹا گیا اور مہمانوں کی تواضع پر تکلف طعام سے کی گئی۔


اب ذرا کچھ پاکستان کے فیسٹیول کی بات ہوجائے۔ بہت ہی شاندار طریقے سے پاکستان فیسیٹول ونکوور کے ڈاؤن ٹاؤن جیک پول پلازہ پر منایا گیا۔ ایک تو بہت ہی حسین لوکیشن یعنی پہاڑ، سمندر، چمکتی ہوئی بلندو بالا عمارات اورپھر علاقہ انتہائی بارونق، پورے ونکوور کے سیاحوں کا مرکز ، واٹرفرنٹ، پاکستان فیسٹیول کے دلچسپ سیگمنٹ ، لوگوں کی چہل پہل نے ایساماحوال بنا دیا کہ بس کیا کہنے، سمجھئے واقعی مزا آگیا۔
طرح طرح کے عمدہ پاکستانی کھانوں کے اسٹال، پاکستانی ملبوسات اور دستکاری کے اسٹال، بچوں کے کھیلنے کے لئے احاطہ، پاکستانی پرچم کے رنگ کے لباس پہنے مرد و خواتین، اسٹیج پر بچوں کی پرفامنس، فیشن شو اور موسیقی نے وہ مسحور کن اور یادگار سماں باندھا کہ اس فیسٹیول کی سنہری یاد ہمیشہ ذہن و دل میں تازہ رہے گی۔ فیسٹیول کی کامیابی پوری پاکستانی کمیونٹی کی کامیابی ہے، جس خوبی سے پاکستانی فن و ثقافت کو پاکستان فیسٹیول کے ذریعے اُجاگر کیا گیا وہ قابلِ ستائش ہے۔۔۔۔۔ پاکستان زندہ باد

مضمون نگار مشہور ادا کارہ‘ کمپیئر اوردو کتابوں کی مصنفہ ہیں۔

This email address is being protected from spambots. You need JavaScript enabled to view it.

 
Read 337 times

Leave a comment

Make sure you enter the (*) required information where indicated. HTML code is not allowed.

Follow Us On Twitter